طالبان سے رابطوں کیلئے بنائی گئی کمیٹیاں قائم رہینگی: حکومتی ذرائع

طالبان سے رابطوں کیلئے بنائی گئی کمیٹیاں قائم رہینگی: حکومتی ذرائع

اسلام آباد (ثناء نیوز) طالبان سے رابطوں کیلئے قائم دونوں کمیٹیاں برقرار رہیں گی، طالبان اور حکومت میں کسی بھی ممکنہ تعطل یا کشیدگی کی صورت میں پہلے سے قائم کمیٹیاں مفاہمت کیلئے کردار ادا کریں گی۔ ان کمیٹیوں کو تحلیل کرنے سے متعلق اطلاعات کو حکومتی ذرائع نے حقائق کے منافی قراردیدیا ہے۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ شراکت داروں کے اتفاق رائے پر ہی حکومت اور طالبان کے درمیان پس پردہ براہ راست مذاکرات کی بساط بچھائی گئی۔ اس بات پر بھی اتفاق رائے ہوا کہ کسی بھی بیان پر ردعمل کے حوالے سے  فریقین احتیاط سے کام لیں گے۔ دونوں اطراف سے با ضابطہ پیغامات کو ہی پالیسی بیان تصور کیا جائیگا۔ اسی  طرح وزیراعظم یا انکے مقرر کردہ ’’فوکل پرسن‘‘ کا بیان یا اعلان حتمی اور طے شدہ بیان تصور ہو گا۔ فریقین کے درمیان براہ راست مذاکرات کیلئے ضابطہ کار طے کرنے کے حوالے سے پیشرفت کا دعوی کیا گیا ہے۔ آئندہ دو تین روز میں اس ضمن میں وفاقی  وزارت داخلہ کے کلیدی کردار پر مشتمل سرکاری کمیٹی کا اعلان کردیا جائے گا۔ خیال رہے یہ پہلے سے موجود امن مذاکراتی کمیٹیوں کے متبادل نہیں بلکہ وفاق اور خیبر پی کے کے نمائندوں پر مشتمل ہوگی۔ پہلے سے موجود کمیٹیاں کسی بھی مشکل صورتحال میں غلط فہمیوں کو دور کرنے کیلئے موجود رہیں گی۔ ممکنہ سخت مطالبات کی صورت میں یہ کمیٹیاں کو اس میں لچک پیدا کرنے کیلئے بھی فریقین کو قائل کرنے سے متعلق بھی یہی کمیٹیاں معاونت کو کردار ادا کریں گی۔