سینٹ کمیٹی نے ائرپورٹس کی حدود میں ہائوسنگ سوسائٹیوں کو سکیورٹی رسک قرار دیدیا

اسلام آباد(آئی این پی) سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے کابینہ سیکرٹریٹ نے ایئرپورٹس کی حدود کے ساتھ بننے والی ہائوسنگ سوسائٹیوں کو سکیورٹی رسک قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ کوئی جتنا بھی بڑا لینڈ مافیا کیوں نہ ہو اسے ملکی سلامتی سے کھیلنے کی ہر گز اجازت نہیں ہونی چاہیے؟ پارک انکلیو منصوبے کیلئے پانچ سال پہلے ممبران سے چار ارب وصول کرلئے گئے ‘ ابھی تک صرف چاردیواری مکمل ہو سکی ہے ، نجی ہائوسنگ سوسائٹیاں لوگوں کے خون پسینے کی کمائی لوٹ رہی ہیں‘ بیس سال گزرنے کے باجود پلاٹ نہیں دیے جاتے‘ سی ڈی اے نے متاثرین کو40 سال کا عرصہ گزرنے کے باجود پلاٹ الاٹ نہیں کئے، قائمہ کمیٹی متاثرین کے مسائل سننے کے لئے سی ڈی اے ہیڈ کوارٹرز میں روزانہ کی بنیاد پر کھلی کچہری لگائے گی۔ اجلاس چیئرپرسن سینیٹر کلثوم پروین کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہائوس میں ہوا ، کمیٹی نے سی ڈی اے کی طرف سے متاثرین کی حصول شدہ اراضی کے واجبات کی عدم ادئیگیوں اور 40 ،40 سال سے متاثرین کو پلاٹوں کی الاٹمنٹ نہ کرنے کے خلاف سی ڈی اے ہیڈ کوارٹر میں قائمہ کمیٹی کا احتجاجی کیمپ لگانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ قائمہ کمیٹی کے تمام اراکین متاثرین کے مسائل کے حل تک سی ڈی اے دفتر میں روزانہ کھلی کچہری لگایا کریں گے۔