حکومتی سختی کے باوجود رمضان بازاروں میں قیمتوں کی زائد وصولی جاری

لاہور (خبر نگار) حکومت کی تمام تر ’’سختی‘‘ کے باوجود رمضان بازاروں میں زائد وصولی کا سلسلہ جاری ہے۔ گذشتہ روز ندیم شہید روڈ پر ’’سجائے گئے‘‘ 15 سے 20 سٹالز کے رمضان بازار میں ایک خاتون نے سبزی کے واحد سٹال پر گوبھی کی قیمت پوچھی تو دکاندار نے 60 روپے بتائی۔ خاتون نے قیمت کا کارڈ دیکھنا چاہا تو موجود نہیں تھا۔ بورڈ پر قیمت 45 روپے کلو درج تھی۔ اصل قیمت سامنے آنے پر دکاندار نے فوراً بات بدلی اور کہا کہ اسے اصل قیمت کا علم نہیں تھا۔ اس سے پوچھا گیا کہ تقریباً ہر سبزی پر قیمت کا کارڈ موجود ہے گوبھی پر قیمت کیوں نہیں لکھی تو اسکے پاس جواب نہیں تھا۔ بازار میں ٹاؤن کا کوئی افسر موجود نہیں تھا۔ کلرک اور جو نائب قاصد افسر کی کرسیوں پر بیٹھے تھے وہ دکاندار کیخلاف کسی قسم کی کارروائی کرنے کے مجاذ نہیں تھے اسلئے ’’بعد‘‘ میں کارروائی کا دعویٰ کرتے رہے۔ دریں اثناء رمضان بازاروں میں قیمتیں اتوار کی نسبت قدرے کم ہوگئیں۔ اتوار کو 64 روپے کلو بکنے والی اروی 52 روپے کلو، 95 روپے کلو بکنے والا جونسہ آم 85 روپے کلو، 92 روپے کلو بکنے والا سیب سفید 85 روپے آڑو 150 کی بجائے 130 روپے، آلو بخارہ 142 کی بجائے 130، کیلا 102 کی بجائے 80 روپے کلو ہو گیا۔