ایف بی آر نے ایکسٹرنل کمیونیکیشن سٹریٹجی کا اعلان کر دیا

اسلام آباد (آن لائن) فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے ٹیکس تنازعات کے حل اور اداروں و ٹیکس دہندگان کے نام بلیک لسٹ سے نکالنے کے حوالے سے ایکسٹرنل کمیونیکیشن سٹریٹجی کا اعلان کردیا ہے۔اس ضمن میں دستیاب دستاویز کے مطابق فیڈرل بورڈآف ریونیو کے تمام چیفس اور ڈائریکٹوریٹ جنرل انٹیلی جننس اینڈ انویسٹی گیشن کسٹمز اینڈ ان لینڈ ریونیو کے ڈائریکٹر ہیڈ کوارٹرز کو خط لکھے گئے ہیں جس میں کہا گیا ہے کہ ایف بی آر کی طرف سے متعارف کروائی جانے والی ایکسٹرنل کمیونیکیشن پالیسی کے تحت ابتدائی طور پر اس پالیسی کا اطلاق ایف بی آر کی جانب سے ٹیکس دہندگان کو فراہم کی جانے والی آٹھ سروسز پر ہوگا اور ان سروسز سے متعلقہ امور و معاملات کو اس پالیسی کے تحت نمٹایا جائے گا۔ خط میں کہا گیا ہے کہ اس پالیسی کے تحت ٹیکس دہندگان کی رجسٹریشن، فیلڈ سروے کے حوالے سے رجسٹریشن بھی اسی پالیسی کے تحت ہوگی۔ علاوہ ازیں اپیل کے فیصلوں کی روشنی میں نظر ثانی شْدہ ٹیکس ڈیمانڈ کے نوٹس اور ٹیکس سے چھوٹ سے متعلق ایگزمشن سرٹیفکیٹس بھی اس نئی ایکسٹرنل کمیونیکیشن پالیسی کے تحت جاری ہوں گے اور ان سے متعلقہ تمام امور متعلقہ ادارے اور افسران اپنی اپنی جوریذڈکشن میں نمٹائیں گے۔ دستاویز میں مزید بتایا گیا ہے کہ ایکٹو ٹیکس پیئرز کی فہرست کی تصیح بھی اسی سٹریٹجی و پالیسی کے تحت ہوگی جبکہ بلیک لسٹ قرار دیئے جانے والے اداروں و ٹیکس دہندگان کو بلیک لسٹ کی فہرست سے نکالنے کے امور بھی اسی سٹریٹجی کے تحت نمٹائے جائیں گے۔ ٹیکس دہندگان کے ٹیکسوں سے متعلقہ تنازعات کے امور بھی اسی سٹریٹجی کے زمرے  میں آئیں گے۔