وزیر مملکت کیڈ کی عدم موجودگی پر سپیکر قومی اسمبلی کی برہمی

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) جمعرات کے روز ایوان زیریں کے وقفہ سوالات کے دران وزیر مملکت برائے کیڈ طارق فضل چوہدری کی عدم موجودگی پر سپیکر قومی اسمبلی برہم ہوئے اور کہا کہ وزیر مملکت کو غالباً اندرون سندھ سے آنا ہوتا ہے اس لیے وہ دیر سے ایوان میں پہنچتے ہیں۔ ایاز صادق نے آئینی اداروں اور دارلحکومت کے سکولوں میں بچوں کے داخلے نہ ملنے سے متعلق سوالات کے مو قع پر وزیر مملکت کے موجود نہ ہونے کے باعث یہ ریمارکس دئے۔ سپیکر نے محسوس کیا کہ وزارت کیڈ کے حکام کو آئنی اداروںکے بارے میں درست معلومات ہی نہیں چنانچہ انہوں نے متعلقہ افسران کو چیمبر میں طلب کر لیا ۔ دریں اثنا دہشت گردی کے واقعات میں شہید ہونے والوں،کشمیری شہداء اور وفاقی وزیر برائے امور کشمیر برجیس طاہر کی ہمشیرہ کے ایصال ثواب کے لئے فاتحہ خوانی کی گئی۔ جمعرات کے روز اجلاس شروع ہونے پر صاحبزادہ یعقوب نے میجر اسحاق شہید‘ ایگری کلچر انسٹی ٹیوٹ ڈیپارٹمنٹ پشاور ‘ وزیرستان میں دہشتگرد حملے اور کشمیری شہداء کے علاوہ کشتی ڈوبنے سے جاں بحق ہونے والے افراد اور وفاقی وزیر امور کشمیر برجیس طاہر کی ہمشیرہ کے ایصال ثواب کے لئے دعا کرائی۔