وفاقی اردو یونیورسٹی میں وائس چانسلر کے عہدے کا پھر تنازعہ، ڈاکٹر ظفر اقبال فارغ

اسلام آباد(نا مہ نگار)وفاقی اردو یونیورسٹی میں ایک دفعہ پھر وائس چانسلر کے عہدے کے حوالے سے تنازعہ کھرا ہو گیا ہے ۔ایوان صدر نے وفاقی اردو یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر ظفر اقبال کو عہدے سے فارغ کردیا گیا ہے جبکہ پروفیسر ڈاکٹر ظفر اقبال نے اپنی جگہ ہر ڈاکٹر الطاف حسین کو وفاقی اردو یونیورسٹی کا قائم مقام وائس چانسلر مقرر کرنے کے نوٹیفیکیشن کو ماننے سے انکار کر دیا ہے ۔،ذرائع کے مطابق ایوان صدر کی جانب سے وفاقی اردو یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر ظفر اقبال کو عہدے سے فارغ کردیا گیا ہے اور اس حوالے سے وفاقی وزارت برائے فیڈرل ایجوکیشن اینڈ پروفیشنل ٹریننگ نے نوٹیفیکیشن بھی جاری کر دیا ہے۔علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی کے سابق وائس چانسلر ڈاکٹر الطاف حسین قائم مقام وائس چانسلر مقرر کردیے گئے ہیں۔وفاقی اردو یونیورسٹی کے سینیٹ کے ڈپٹی چیئرمین جاوید اشرف نے وائس چانسلر کی سبکدوشی اور ڈاکٹر الطاف حسین کی تقرری کی تصدیق کردی ہے ۔سبکدوش کیے گئے وائس چانسلر ڈاکٹر ظفر اقبال کو یونیورسٹی کی سینیٹ ان پر لگے الزمات کی صفائی کے سلسلے میں دو بار پیش ہونے کا موقع دیا تھا لیکن ڈاکٹرظفر اقبال دونوں مرتبہ سینیٹ کے سامنے پیش نہیں ہوئے ،سینیٹ نے ظفر اقبال کو دو ماہ قبل عہدے سے ہٹانے کی سفارش کی تھی۔دوسری جانب پروفیسر ڈاکٹر ظفر اقبال نے وفاقی وزارت برائے فیڈرل ایجوکیشن اینڈ پروفیشنل ٹریننگ کی جانب سے ڈاکٹر الطاف حسین کو وفاقی اردو یونیورسٹی کا قائم مقام وائس چانسلر مقرر کرنے کے نوٹیفیکیشن کو مسترد کرتے ہوئے اسے غیر قانونی قرار دیا ہے ۔جمعرات کو اپنے ایک بیان میں انھوں نے کہا کہ وفاقی اردو یونیورسٹی کی سینیٹ کے غیر قانونی اجلاس اور اس کی سفارشات کا معاملہ اسلام آباد ہائی کورٹ میں زیر سماعت ہے اور اس کیس کی سماعت 14فروری 2017کو ہونا ہے اس پہلے وزارت تعلیم کی طرف سے کیا جانے والا کوئی بھی اقدام غیر قانونی ہے تاہم معزز عدالت کی طرف سے پہلے ہی اس ضمن میں توہین عدالت کے نوٹس جاری کر رکھے ہیں ۔