ختم نبوت کا نعرہ لگانے والوں کا مقصد ختم حکومت تھا، مفتی اور پیر تو سرپلس ہیں: احسن اقبال

اسلام آباد (نا مہ نگار) وزیر داخلہ احسن اقبال نے کہاہے کہ ختم نبوت کا نعرہ لگانے والوں کا مقصد ختم حکومت تھا،پاکستان میں مفتی اور پیرتو سرپلس میں ہیں لیکن سائنسدانوں کی کمی ہے،آج ہمیں اسلام کے لیے نہیں بلکہ ٹیکنالوجی میں پیچھے رہنے کے خلاف دھرنا دینے کی ضرورت ہے،سترسال سے پاکستان میںکسی جمہوری حکومت کو چلنے نہیں دیا گیا یہی وجہ ہے کہ مشرقی پاکستان ہم سے الگ ہوا ، بلوچستان اور سندھ میں حالات خراب ہوئے بدقسمتی سے سترسال میں انہیں ایک بھی وزیراعظم ’’بندے کا پتر‘‘ نہیں نظرآیا۔ان خیالا ت کا ظہار انہوں نے گزشتہ روز ہائرایجوکیشن کمیشن میں چینی کمپنی ہواوے کے تحت سکل مقابلہ جات میں پوزیشن لینے والے طلباء و طالبات کے اعزاز میںمنعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہاکہ اگر ملک میں سیاسی بحران نہ ہوتا تو ملک میں جی ٹی پی 6 اشاریہ 5 ہوتی ،ہمارا سب سے بڑا اثاثہ نوجوان ہیں،10 لاکھ طلبا میں لیپ ٹاپس تقسیم کیے جاچکے ہیں،نوجوان ہمارے اعتماد پر پورا اترے ہیں،تھری جی فور جی لائسنز کے لئے ہم نے لائسنس جاری کیے،پاکستان 5 جی ٹیکنالوجی کے لئے بھی تیار ہے،سی پیک کے زریعے انفارمیشن موٹروے بن رہی ہے،یہ صدی اقتصادی نظریات کی صدی ہے،چین دنیا کے لئے مشعل راہ ہے،چین نے امن اور استحکام کا راستہ اپنایا ہے،ہمیں اس ملک کے امن اور استحکام کو قائم کرنے کی ضرورت ہے،چند قوتیں پاکستان میں بے یقینی پیدا کرنا چاہتی ہیں،پاکستان کا امیج فیض آباد دھرنے سے بننے والا نہیں بنانا چاہتے،ہم نوجوانوں والا امیج دنیا کو دکھانا چاہتے ہیں،ملک 70 سال میں سازشوں سے نہیں نکل سکا ،سول حکومتوں کو چلنے نہیں دیا گیا،کیا کوئی وزیراعظم انسان کا بچہ نہیں تھا جو وہ پاکستان کو نہیں چلا سکتا تھا۔ ہم سب مسلمان ہیں سب ختم نبوت پر یقین رکھتے ہیں،آمروں نے ملک خراب کرکے کہا سیاسی حکومتیں ٹھیک کریں ،جتنے فتوے پاکستان میں دیے جاتے ہیں دنیا میں کہیں نہیں دیے جاتے، امریکی سفارتخانہ یروشلم منتقل کرنے کی مذمت کرتے ہیں، ہمیں یہ بھی دیکھنا ہوگا امریکہ نے یہ فیصلہ کیوں کیا۔