آصف زرداری کو قادری نے ملاقات کی دعوت دی تھی، خورشید شاہ

اسلام آباد (وقائع نگار خصوصی ) قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے کہا ہے کہ ماڈل ٹائون رپورٹ اوپن ہو گئی، اب اس کو دیکھنا اداروں اور عدلیہ کا کام ہے،ٹرمپ کے بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کا اقدام قابل مذمت ہے۔ دس بیس سالوں سے مسلم ممالک کے آپس کے انتشار سے یہودیوں کو موقع ملا۔مسلم ممالک کے باہمی انتشار سے فائدہ اٹھایا جا رہا ہے۔ خورشید شاہ نے کہا ایک بار پھر ذوالفقار علی بھٹو کا کردار درکار ہے۔ پیپلز پارٹی سڑکوں اور انتشار کی سیاست سے باہر رہی ہے۔ قادری صاحب سے ملاقات نئی نہیںپہلے بھی رابطے رہے ہیں۔ صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ آصف زرادری کو طاہر القادری نے ملاقات کی دعوت دی جس پر وہ ملنے گئے ہیں، انہوں نے کہا ہم 2002 میں مشرف کے خلاف ایک ساتھ چلے ہیں۔ انہوں نے کہا ماڈل ٹائون رپورٹ اوپن ہو گئی۔ اب اداروں اور عدلیہ کا کام ہے اس کو دیکھے۔اپوزیشن لیڈر نے ٹرمپ کے بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کے اقدام کی مذ مت کی اور کہا عالم اسلام میں بہت زیادہ کشیدگی، انتشار پیدا ہوا ہے۔ خورشید شاہ نے کہا امریکہ دنیا میں بڑا انتشار پیدا کرنا چاہتا ہے۔