سپریم کورٹ اورنج لائن میٹرو ٹرین کیس کا فیصلہ آج سنائے گی

اسلام آباد(نمائندہ نوائے وقت)سپریم کورٹ آف پاکستان میں اورنج لائن میٹروٹرین منصوبہ کیس کا فیصلہ آج سنایا جائے گا، فیصلہ تقریبا آٹھ ماہ قبل محفوظ کیا گیا تھا۔فیصلہ جسٹس اعجازافضل خان کی سربراہی میں 5رکنی لارجربنچ سنائے گا ،یادرہے کہ لارجربنچ نے 17اپریل 2017 کو فریقین کے وکلاء کے دلائل مکمل ہونے پر محفوظ کرلیاتھا ،واضح رہے کہ وطن پارٹی کے صدر بیرسٹر ظفراللہ خان نے 17نومبر کو سپریم کورٹ کی لاہور رجسٹری برانچ میں مقدمے کے جلد فیصلے کے لیے درخواست بھی دائر کی جس میں مئوقف اختیا رکیا تھا کہ کیس کے فیصلے میں تاخیر کے باعث لاہور شہر کے لاکھوں رہائشیوں کو مشکلات کا سامنا ہے جبکہ میٹرو ٹرین منصوبے کی بروقت تکمیل نہ ہونے کے باعث اس کی لاگت میں کروڑوں روپے کا اضافہ ہونے سے قومی خزانے کو بھاری نقصان بھی پہنچ رہا ہے ،منصوبے کی تکمیل سے لاہور شہرکی سڑکوں پر لاکھوں کی تعداد میں گاڑیوں کابوجھ بھی کم ہوگا ،درخواست گزار نے عدالت سے استدعا کی تھی کہ مزید تاخیر کی بجائے جلد فیصلہ جاری کیا جائے، سپریم کورٹ کے جسٹس اعجاز افضل کی سربراہی میں 5 رکنی لارجر بنچ نے کیس کی سماعت کی تھی۔ جبکہ کیس کیخلاف پنجاب حکومت کی جانب پانچ مختلف اپیلیں دائر کی گئی تھیں۔ واضح رہے لاہور ہائیکورٹ نے اورنج لائن میٹروٹرین کے راستوں میں آنے والی تاریخی عمارتیں اور مساجد محفوظ بنانے کاحکم دیاتھا۔