صدر کی نئے چیف جسٹس کو مبارکباد، نواز شریف کو انتظار کرنا پڑا، پہلی مرتبہ سبکدوش چیف جسٹس کو عشائیہ، جسٹس تصدق نے سرکاری گھر خالی کر کے شاندار روایت قائم کر دی، حلف کا متن اور تلاوت کی گئی آیات کا ترجمہ

اسلام آباد (آن لائن+ آئی این پی+ ثناء نیوز) ایوان صدر میں نئے چیف جسٹس ناصر الملک کی حلف برداری تقریب میں حلف اٹھانے کے بعد جب تقریب ختم ہوئی تو صدر ممنو ن حسین جسٹس ناصر الملک کو مبارکباد دینے لگے۔ اس موقع پر انہوں نے نئے چیف جسٹس سے کچھ بات چیت شروع کر دی جس کے باعث ان کے پیچھے کھڑے وزیراعظم محمد نواز شریف کو نئے چیف جسٹس سے مصافحہ کیلئے کچھ انتظار کرنا پڑگیا۔ چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ناصر الملک کی تقریب حلف برداری میں تلاوت کی گئی قرآنی آیات کا ترجمہ درج ذیل ہے: ’’اﷲ کے نام سے شروع جو بڑا مہربان اور نہایت رحم فرمانے والا ہے۔ بیشک اﷲ ہر ایک کے ساتھ عدل اور احسان کا حکم فرماتا ہے اور قرابت داروں کو دیتے رہنے کا اور بے حیائی اور بُرے کاموں اور  سرکشی و نافرمانی سے منع فرماتا ہے وہ تمہیں نصحیت فرماتا ہے تاکہ تم خود یاد رکھو اور تم اﷲ کا حق پورا دیا کرو جبکہ تم عہد کرو اور قسموں کو پختہ کر لینے کے بعد انہیں مت توڑا کرو حالانکہ تم اﷲ کو اپنے آپ پر ضامن بنا چکے ہو، بیشک اﷲ خوب جانتا ہے جو کچھ تم کرتے ہو‘‘۔ نئے چیف جسٹس  نے رخصت ہونے والے چیف جسٹس کے اعزاز میں عشائیہ دے کر شاندار روایت قائم کر دی۔ نئے چیف جسٹس ناصر الملک کی حلف برداری تقریب کے باعث اتوار کو بھی وفاقی دارالحکومت میں سکیورٹی انتہائی الرٹ رکھی گئی۔ سابق چیف جسٹس، جسٹس تصدق حسین جیلانی نے  ریٹائرمنٹ سے اگلے روز سرکاری رہائشگاہ خالی کرکے شاندار روایت قائم کر دی۔ نئے چیف جسٹس ناصر الملک سے حلف کا متن کچھ یوں تھا۔’’بسم اللہ الرحمن الرحیم‘‘ میں جسٹس ناصر الملک صدق دل سے حلف اٹھاتا ہوں کہ میں خلوص نیت سے پاکستان کا حامی اور وفادار رہوں گاکہ بحیثیت چیف جسٹس آف پاکستان میں اپنے فرائض و کارہائے منصبی ایمانداری، اپنی انتہائی صلاحیت اور وفاداری کے ساتھ، اسلامی جمہوریہ پاکستان کے دستور اور قانون کے مطابق انجام دوں گا۔کہ میں اعلیٰ عدالتی کونسل کے جاری کردہ ضابطہ اخلاق کی پابندی کروں گا۔ کہ میں اپنے ذاتی مفاد کو اپنے سرکاری کام یا اپنے سرکاری فیصلوں پر اثر انداز نہیں ہونے دوں گا۔ کہ میں اسلامی جمہوریہ پاکستان کے دستور کو برقرار رکھوں گااور اس کا تحفظ اور دفاع کروں گا۔ اور یہ کہ میں، ہر حالت میں، ہر قسم کے لوگوں کے ساتھ، بلاخوف و رعایت اور بلارغبت و عناد، قانون کے مطابق انصاف کروں گا۔اللہ تعالیٰ میری مدد اور رہنمائی فرمائے، آمین‘‘
حلف /(جھلکیاں)