سپریم کورٹ کا حکم بے اثر،کئی اداروں کے سربراہان کے تقرر میں پیشرفت نہیں ہوسکی

اسلام آباد (آن لائن) سپریم کورٹ کے حکم کے باوجود کئی اداروں کے سربراہان کے تقرر میں تاحال کوئی پیشرفت نہیں ہو سکی اور اس کے لئے قائم کیا گیا خود مختار و نیم خود مختار ادارہ سرکاری اداروں کے سربراہوں کے انتخاب کا وفاقی کمیشن (ایف سی ایچ پی ایس او) عملاً غیر فعال ہو چکا ہے اور اس کی بے حسی کی وجہ سے تقریباً ایک سال  گزرنے کے باوجود ان اداروں کے سربراہان کے تقرر نہیں کیا جا سکا۔ کمشن 22 جولائی2013 کو قائم کیا گیا جس کے تحت 58 سرکاری اداروں کے سربراہان کی تقرریاں کی جانی تھیں۔قابل ذکر بات پر ہے کہ کمیشن کو عالمی شہرت کی حامل ایک کمپنی فرگوسن کے ذریعے ایک مطلوبہ ادارے کے سربراہ کے تقرر کے لئے اخبارات میں اشتہار جاری کرنے اور امید اروں کے چنائو کے لئے امید واروں کے شارٹ لسٹ کا بھی اختیارات دیئے گئے ہیں لیکن 11 ماہ گزرنے کے باوجود جتنی بھی تقرریاں کی گئی ہیں ان میں اہم تعیناتیاں کمشن کو بھی بائی پاس کر کے کی گئی ہیں۔ انہی وجوہات کی بناء پر چند ماہ قبل اس کمیشن کو دیئے گئے 58 اداروں کی تعداد کو کم کر کے اب صرف23 کردیا گیا ہے ۔ یہ کمشن ادارے کے سربراہان کا تقرر زیادہ تر ایم پی ون سکیلز میں کرتا ہے  ۔