تحریک انصاف زیر التوا دھاندلیوں کے کیس جیت کر بھی حکومت میں نہیں آسکتی: فافن

اسلام آباد(آئی این پی) فری اینڈ فیئر الیکشن نیٹ ورک (فافن) نے تحریک انصاف کے عام انتخابات میں مبینہ دھاندلیوں کے کیس کو کمزور قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ الیکشن ٹربیونلز غیر جانبداری سے کام سرانجام دے رہے ہیں‘ اگر تحریک انصاف الیکشن ٹربیونلز میں زیر التواء تمام دھاندلیوں کے کیس جیت بھی جائے تب بھی وہ پنجاب اور وفاق میں حکومت میں نہیں آسکتی‘ الیکشن ٹربیونلز میں تحریک انصاف کیساتھ ساتھ مسلم لیگ (ن) کے بھی مقدمات تاخیر کا شکار رہے۔ فافن کی جانب سے جاری کردہ پوسٹ الیکشن کمپلینٹ ہینڈلنگ رپورٹ کے مطابق 11 مئی 2013ء کو ہونے والے عام انتخابات میں کل 410 دھاندلیوں اور بے ضابطگیوں کی درخواستیں الیکشن کمشن میں دائر کی گئیں جن میں 301 کو 31 مئی 2014ء تک کا فیصلہ کردیا گیا ہے جبکہ 100 سے زائد درخواستیں تاحال الیکشن ٹربیونلز میں زیر التوا ہیں۔ رپورٹ کے مطابق تحریک انصاف کی 58 شکایات میں سے 37 کے فیصلے ہوچکے ہیں جبکہ 21 ابھی زیر التوا ہیں۔ حیران کن طور پر تحریک انصاف کی 37 شکایات میں سے کسی بھی کیس میں کامیابی حاصل نہیں کرسکی۔ مسلم لیگ کے 66 کیسوں میں سے 38 درخواستوں پر فیصلہ سنایا گیا جن میں چار میں نتائج تبدیل ہوئے جبکہ تاحال 28 شکایات زیر التوا ہیں۔
فافن