پاکستانی ایٹمی اثاثوں کے حوالے سے ”تحقیقاتی آرٹیکل“ لکھنے والے صحافی کبھی پاکستان آئے نہ کسی سے رابطہ کیا

اسلام آباد (نیشن رپورٹ / ایس ایم حالی) امریکی میگزین ”اٹلانٹک“ میں پاکستان ایٹمی اثاثوں کے حوالے سے مضحکہ خیز آرٹیکل لکھنے والے جیفری گولڈبرگ اور مارک ایمبنڈر نے اگرچہ دعویٰ کیا ہے کہ انہوں نے 6 ماہ کی تحقیق کے بعد یہ آرٹیکل لکھا‘ حقیقت یہ ہے کہ دونوں حضرات کبھی پاکستان نہیں آئے اور محض ”ٹیبل سٹوری“ فائل کر دی۔ پاکستانی ایٹمی کمانڈ سے تعلق رکھنے والے تمام افسروں نے کبھی ان دونوں افراد کا نام بھی نہیں سنا اور جب ان سے ان دونوں حضرات کا ذکر کیا گیا تو انہیں حیرانگی ہوئی کیونکہ سٹرٹیجک پلان ڈویژن ملکی اور غیر ملکی صحافیوں سے باقاعدہ رابطے میں رہتا ہے۔ معلوم ہوتا ہے کہ دونوں حضرات کی ”بے سروپا کہانی“ پاکستان کو بدنام کرنے اور پاکستان ایٹمی اثاثوں کے خلاف پراپیگنڈہ کی مہم کا حصہ ہے۔