سینٹ : غیر حاضری پر وزرا کا داخلہ بند کر دیا جائیگا‘ چیئرمین کی رولنگ

سینٹ : غیر حاضری پر وزرا کا داخلہ بند کر دیا جائیگا‘  چیئرمین کی رولنگ

اسلام آباد (نوائے وقت نیوز + اے پی پی + آئی این پی) سینیٹ میں وقفہ سوالات کے دوران بعض وزراء کی عدم موجودگی پر ایم کیو ایم اور عوامی نیشنل پارٹی کے ارکان نے احتجاج کیا۔  ایم کیو ایم کے پارلیمانی لیڈر طاہر حسین مشہدی اور عوامی نیشنل پارٹی کے الیاس احمد بلور نے کہا وزراء کی ایوان میں موجودگی ضروری ہوتی ہے، چیئرمین کو اس معاملے کا نوٹس لینا چاہئے۔ سعید غنی اور حاصل بزنجو نے کہا وقفہ سوالات وزراء کی عدم موجودگی میں آگے نہیں بڑھ سکتا۔ نوائے وقت رپورٹ کے مطابق چیئرمین سینٹ رضا ربانی نے وزراء کی غیر حاضری پر رولنگ دیتے ہوئے تنبیہہ کی۔ سینٹ سے وزراء غیر حاضر ہوئے تو ایوان میں داخلے پر پابندی لگا دی جائے گی وزراء اپنی حاضری کو یقینی بنائیں۔  آن لائن کے مطابق وقفہ سوالات کے دوران اسحاق ڈار کی غیر حاضری رضا ربانی نے  ایوان کی رائے جانی تو سینیٹر سعید غنی نے کہا وزیر خزانہ ہر وقت چھٹی کی درخواست دے دیتے ہیں، وقفہ سوالات کے دوران پیش نہیں ہوتے یہ رویہ ٹھیک نہیں۔ سینیٹر  ناصر جنجوعہ نے کہا فنانس وزیر اور وزیر داخلہ  ایوان میں نہیں آتے اس پر سختی سے نوٹس لینا چاہئے۔ سینیٹر طاہر مشہدی نے کہا ایوان میں  متعلقہ وزیر کا ہونا لازمی ہے۔ الیاس بلور نے کہا آج کل تمام وزرا بہت مصروف ہو چکے ہیں  یہاں تک کہ سینٹ کی کارروائی میں حصہ لینے بھی نہیں آتے جس پر قائد ایوان ظفر الحق نے کہا وزیر خزانہ اسحاق ڈار ملک سے باہر ہیں جس کے بعد چیئرمین سینٹ نے  رولنگ دیتے  ہوئے کہا یہ ہماری بدقسمتی ہے وقفہ سوالات کے دوران حکومت کی جانب سے سنجیدگی نہیں دکھائی جاتی حالانکہ یہ حکومت کی ذمہ داری میں شامل ہے۔ چیئرمین رضا ربانی نے کہا کہ اگلی مرتبہ ایوان کے سیشن کے دوران تمام وزراء  مصروفیات کو علیحدہ کرکے ایوان میں حاضری یقینی بنائیں۔ نوائے وقت نیوز کے مطابق  سینیٹ میں قائد ایوان راجہ ظفر الحق نے کہا ہے امریکی ریاست ٹیکساس میں توہین آمیز خاکے بنانے کے مقابلے کے خلاف سینیٹ میںآج بروز بدھ قرارداد مذمت لائی جائے گی۔ مشاہد حسین سید کے نکتہ اعتراض کے جواب میں انہوں نے کہا او آئی سی کو بھی یقینی طور پر اس معاملے پر متحرک کرنے کی ضرورت ہے۔ اس سے قبل نکتہ اعتراض پر (ق) لیگ کے سیکرٹری جنرل سینیٹر مشاہد حسین سید نے کہا امریکی ریاست ٹیکساس میں توہین آمیز خاکوں کے مقابلوں کا انعقاد قابل مذمت اور اسلام کے خلاف سازش ہے۔ آزادی اظہار کی بھی کوئی حد ہوتی ہے۔ حکومت او آئی سی کو متحرک کرے اور صدر اوباما اور یورپی پارلیمنٹ کے صدر کو بھی خطوط تحریر کئے جائیں کہ وہ مغرب میں پائے جانے والے اسلام فوبیا کے خاتمے میں اپنا کردار ادا کریں۔ سینیٹر ایم حمزہ نے کہا توہین آمیز خاکوں کی تیاری کی مذمت کے لئے سینیٹ میں متفقہ قرارداد منظور کی جائے۔ چیئرمین سینیٹ رضا ربانی نے سابق وفاقی وزیر آفتاب احمد خان شیرپائو پر حملے سے متعلق تفصیلی رپورٹ طلب کر لی۔ سینیٹ کے اجلاس میں مسلم لیگ (ن) کے نثار محمد خان نے آفتاب شیرپائو کے قافلے پر خود کش حملے کا معاملہ اٹھایا جس پر چیئرمین نے کہا وزارت داخلہ سے واقعہ کی تفصیلی رپورٹ طلب کرکے ایوان میں پیش کیا جائے۔ قائد ایوان راجہ ظفر الحق نے کہا جمعرات کو تفصیلی رپورٹ پیش کی جائے گی۔ سینیٹر نثار محمد خان نے نکتہ اعتراض پر کہا آفتاب شیرپائو پر چوتھا خودکش حملہ ہوا ہے جبکہ ان پر مجموعی طور پر11حملے ہو چکے ہیں۔ ایوان میں یہ بات کی جاتی ہے یہ صوبائی مسئلہ ہے۔ خیبر پی کے کے حالات  بالکل مختلف ہیں وہاں آگ برس رہی ہے، شیرپائو ہی نہیں باقی قائدین پر بھی حملے ہوتے ہیں۔عوام الناس کی جان و مال کے تحفظ کیلئے وفاقی حکومت کوئی واضح میکانزم وضع کرے۔ اعتزاز احسن نے کہا قرارداد آئی تو ہم اس کی حمایت کریں گے۔ صباح نیوز کے مطابق چیئرمین سینیٹ رضا ربانی نے کہا پیمرا اپنی ذمہ داری پوری نہیں کررہا، نااہلی کے باعث پیمرا قوانین کا غلط استعمال کیا جاتا ہے، چیئرمین سینیٹ نے حج فارم میں اضافی کالم پر وزیر مذہبی امور کو  آج یوان میں معاملے کی وضاحت کرنے کی ہدایت کر دی۔ رحمان ملک نے نیوز چینلز پر پی پی قیادت کی کردار کشی پر سینیٹ میں سخت اعتراض کیا اور کہا کہ وزیراعظم، صدر اور معززین کی پیروڈی اور لیڈر شپ کی بے عزتی کی جارہی ہے، کیا ہم سب جوکرز ہیں۔ اے پی پی کے مطابق سینیٹ میں پاکستان کے قوانین کی طباعت (ضوابط) آرڈیننس 2015ء پیش کر دیا گیا۔ عوامی نیشنل پارٹی سندھ کے صدر سینیٹر شاہی سید نکتہ اعتراض پر کہا اسلام آباد میں ویلفیئر بورڈ کے کارکنوں اور اساتذہ پر تشدد کا نوٹس لیا جائے۔ چیئرمین سینٹ نے سندھ میں بجلی کے لٹکتے تاروں کی مرمت نہ کرنے کا معاملہ قائمہ کمیٹی برائے پانی و بجلی کے سپرد کر دیا۔ سینیٹر تاج حیدر نے کہا پورے سندھ میں بجلی  کے  تار لٹکے ہوئے ہیں، متعلقہ محکمہ کوئی کارروائی نہیں کر رہا۔ وزیر مملکت برائے پارلیمانی امور شیخ آفتاب احمد نے کہا بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام ایک اچھا پروگرام ہے، اس کا دائرہ مزید بڑھایا جائے گا۔  سینیٹ کا اجلاس (آج) بروز بدھ صبح دس بجے تک ملتوی کر دیا گیا۔