جنگ، جیو گروپ کے مالک اور عامر میر کیخلاف مقدمے کے اندراج کا حکم معطل لاہور ہائیکورٹ، سیشن جج بہاولپور نے جیو کیخلاف درخواستیں خارج کر دیں

اسلام آباد (وقائع نگار) اسلام آباد ہائیکورٹ کے سینئر ترین جج جسٹس ریاض احمد خان نے جنگ، جیو گروپ کے مالک اور صحافی عامر میر کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کے حوالے سے ماتحت عدالت کا فیصلہ معطل کر دیا اور فریقین کو نوٹس جاری کرنے کا حکم دیتے ہوئے سماعت ملتوی کر دی۔ ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج جسٹس آف پیس اسلام آباد محمد جہانگیر اعوان کا حکم اسلام آباد ہائی کورٹ میں دو مختلف درخواستوں کے ذریعے چیلنج کیا گیا۔ پیر کو درخواست گزاروں کی جانب سے فیصل اقبال، بہزاد حیدر اور عامر عبداللہ عباسی ایڈووکیٹ نے عدالت کو بتایا جس شہری کی درخواست پر مذکورہ احکامات جاری کئے گئے وہ متاثرہ فریق نہیں اور متاثرہ فریق پہلے ہی وزارت دفاع کے ذریعے پیمرا سے رجوع کر چکا ہے۔ ابتدائی دلائل سننے کے بعد جسٹس ریاض احمد خان نے احکامات لکھوانے شروع کئے تو ارشد بٹ نامی شہری کے وکیل قمر افضل نے ماتحت عدالت کے حکم کو معطل کرنے کی مخالفت کی تاہم عدالت نے ان کی استدعا مسترد کرتے ہوئے مذکورہ احکامات جاری کر دیئے۔ قبل ازیں ضلع کچہری اسلام آباد میں صحافیوں سے گفتگو کے دوران ارشد بٹ نے جیو ٹی وی کے دفتر کے سامنے خود سوزی کی دھمکی بھی دی۔ مزید برآں نوائے وقت رپورٹ کے مطابق لاہور ہائی کورٹ راولپنڈی بنچ نے جیو کے خلاف دائر درخواست خارج کر دی۔ درخواست سید خلیل نامی شہری کی جانب سے دائر کی گئی تھی۔ لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس سردار طارق مسعود نے سماعت کے بعد خارج کی۔ درخواست گزار نے جیو کو بند کرنے کی استدعا کی تھی جو مسترد کر دی گئی۔ لاہور ہائی کورٹ نے درخواست پر سماعت کے بعد فیصلہ محفوظ کر لیا تھا۔ جیو کے خلاف سپریم کورٹ میں استغاثہ دائر کرنے کے لئے وفاق کو ہدایت کرنے کی بھی استدعا کی گئی تھی۔ علاوہ ازیں ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج بہاولپور نے جنگ، جیو کی انتظامیہ کے خلاف اندراج مقدمہ کی درخواست مسترد کر دی۔ درخواست میں عامر میر، رانا جواد، انصار عباسی اور دیگر ذمہ داروں کے خلاف مقدمہ درج کرنے کی استدعا کی گئی تھی۔