مقدمات بحالی‘ سوئس عدالت سے رابطے کا معاملہ ڈیڈ لاک کا شکار

اسلا م آباد (چودھری صداقت) سپریم کورٹ میں این آر او فیصلے پر عملدرآمد کی آئندہ سماعت کو سات روز رہ گئے جبکہ حکومت نے سوئس عدالت کو تاحال مقدمات بحالی کا خط نہیں لکھا‘ عدالت نے این آر او فیصلے پر عملدرآمد کے حوالے سے نیب کو جواب دینے کے لئے 12 مارچ کی تاریخ دے رکھی ہے مگر خط لکھنے کا معاملہ حکومت کے مختلف اداروں میں پھنس کر رہ گیا ہے۔ نیب کے چیئرمین نے اس حوالے سے وزارت قانون سے اجازت طلب کر رکھی ہے جس کا ان کو تاحال جواب موصول نہیں ہوا۔ ادھر خط لکھنے کے لئے قانونی طور پر متعلقہ ادارے اٹارنی جنرل آفس کا کہنا ہے کہ وہ خط صرف حکومت کی تحریری ہدایات کی روشنی میں ہی لکھے گا۔ اٹارنی جنرل اس حوالے سے سابقہ اٹارنی جنرل ملک قیوم کی مثال کو سامنے رکھے ہوئے ہیں جنہوں ے زبانی ہدایات پر آصف علی زرداری کے مقدمات واپس لینے کے لئے رابطہ کرلیا جس پر انہیں بعدازاں سپریم کورٹ کی سخت ہدایات کا سامنا کرنا پڑا موجودہ اٹارنی جنرل اب زبانی ہدایات پر کوئی اقدام اٹھانے کے حق میں نہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ حکومت نے خط کا ڈرافٹ تیار کررکھا ہے مگر اسے سوئس عدالت کو بھیجنے پر مختلف عہدیداروں اور اداروں میں اتفاق رائے نہیں ہو رہا۔