سی این جی سٹیشنوں کے غیر قانونی لائسنس جاری کرنیوالوں پر مقدمات درج کرائیں گے: سپریم کورٹ

سی این جی سٹیشنوں کے غیر قانونی لائسنس جاری کرنیوالوں پر مقدمات درج کرائیں گے: سپریم کورٹ

اسلام آباد (نمائندہ نوائے وقت+آئی این پی) سپریم کورٹ نے گیس چوری روکنے اور خلاف ضابطہ سی این جی سٹیشنوں کے قیام پر شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے اوگرا کی جانب سے پیش کی جانے والی رپورٹ پر عدم اعتماد کا اظہار کر دیا‘ عدالت نے ملک میں قائم تمام سی این جی سٹیشنز کا ریکارڈ طلب کرتے ہوئے اوگرا کو ہدایت کی ہے کہ ٹیکس ادا کرنے والے تمام سی این جی سٹیشنز کی رپورٹ عدالت میں پیش کی جائے ۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دئیے ہیں کہ جس نے بھی غیر قانونی لائسنس جاری کیے اُن کے خلاف کیس رجسٹرڈ کروائیں گے ہمیں سکولوں کی فکر ہے جہاں بچے پڑھتے ہیں‘ روزانہ ٹی و ی پر خبریں آتیں ہیں لوگ پائپ لگا کر گیس چوری کر رہے ہیں ‘ اوگرا وہ با اثر لوگ پکڑ نہیں سکتا‘ جن لوگوں نے لائسنس جاری کیے ہیں‘ انہیں کیوں نہیں پکڑا جاتا ۔ عدالت نے ایف بی آر کو اوگرا سے تعاون کرنے کا حکم جاری کرتے ہوئے مقدمہ کی سماعت 11جولائی تک ملتوی کر دی ۔ جمعہ کو چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں جسٹس گلزار احمد اور جسٹس اعجاز احمد چوہدری پر مشتمل 3 رکنی بنچ نے سابق وزراءاعظم کے دور میں غیر قانونی سی این جی لائسنس کیس کی سماعت کی۔ اس موقع پر ایف آئی اے اور اوگرا نے اپنی رپورٹ سپریم کورٹ میں پیش کیں۔ ایف آئی اے کی رپورٹ کے مطابق 8.5کلو میٹر کی ایک سڑک پر سولہ سی این جی پمپس ہیں جبکہ اوگرا نے 349 ایسے سی این جی پمپس کی نشاندہی کی جو سکول مساجد اور ہسپتالوں کے ساتھ ہیں اوگرا کے چیئرمین سعیداحمد نے عدالت کو بتایا کہ ہم نے انہیں شو کاز نوٹس جاری کر دیئے ہیں ۔چیف جسٹس نے ریمارکس میں کہا کہ ایسے سٹیشن کی گیس بند کر دینی چاہیے آپ نے کارروائی کیوں نہیں کی جبکہ جسٹس اعجاز احمد چوہدری نے ریمارکس میں کہا کہ جن لوگوں نے لائسنس جاری کیے ہیں آپ نے انھیں کیوں نہیں بلوایا ،ملک میں گیس چوری ہو رہی ہے آپ لوگوں کو پکڑتے ہی نہیں سعید صاحب آپ مکمل طور پر ناکام ہو چکے ہیں وہ با اثر لوگ ہیں آپ انھیں پکڑ نہیں سکتے۔ اوگرا کے چیئرمین سعید خان نے کہا کہ گیس چوری کا معاملہ ایس این جی پی ایل کا ہے اس سے اوگرا کا کوئی تعلق نہیں جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ سی این جی پر گیس چوری ہونے کا معاملہ آپ کی ذمہ داری ہے انھیں کیوں نہیں پکڑتے لگتا ہے اوگرا خود ہی اس کیس میں دلچسپی نہیں لے رہا، لاہور اور گوجرنوالہ کے علاوہ بھی پورے ملک میں گیس چوری ہو رہی ہے اس پر سعید نے کہا کہ ہم دوسرے صوبوں میں بھی جا رہے ہیں اور گیس چوری سے متعلق شوکاز بھی جاری کر دیں گے۔