این آر او پارلیمنٹ میں نہ لانے کے اتحادیوں کے نقطہ نظر کی حمایت کرتے ہیں: زرداری

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک + ریڈیو نیوز + ایجنسیاں) صدر آصف زرداری نے کہا ہے کہ این آر او کو پارلیمنٹ میں نہ لانے کے اتحادی جماعتوں کے نقطہ نظر کا احترام کرتے ہیں۔ پیپلز پارٹی نے ہمیشہ جمہوریت کے دفاع میں اہم کردار ادا کیا ہے‘ آئندہ بھی کریں گے۔ یہ بات انہوں نے مولانا فضل الرحمن کی قیادت میں وفد سے ملاقات میں کہی۔ انہوں نے کہا کہ جمہوریت کے تحفظ کیلئے پرعزم ہیں اور جمہوری نظام کو ڈی ریل کرنے کی اجازت کسی کو نہیں دیں گے۔ صدر نے پی پی پی اور جے یو آئی کے اتحاد کے معاملے پر بابر اعوان کی کنوینئرشپ میں کمیٹی بنا دی۔ اس موقع پر فضل الرحمن نے کہا کہ ہم حکومت کے اتحادی ہیں اور اتحاد میں تمام معاہدوں کا احترام کریں گے۔ پیپلز پارٹی بلوچستان کے ارکان نے بھی صدر سے ملاقات کی۔ دریں اثنا صدر زرداری نے کہا ہے کہ جنوبی وزیرستان میں فوجی آپریشن کے باعث شدت پسند پسپا ہو رہے ہیں۔ ملک میں کام کرنے والے اقوام متحدہ کے اہلکاروں کو فول پروف سکیورٹی فراہم کی جائے گی۔ وہ سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ بان کی مون کے پاکستان کے لئے خصوصی نمائندہ برائے انسانی امداد جین موریس ریپرٹ سے گفتگو کر رہے تھے۔ صدر نے پاکستانی عوام خصوصاً آپریشن سے متاثرہ علاقوں میں اقوام متحدہ کی جانب سے کی جانے والی امدادی کارروائیوں پر خراج تحسین پیش کیا۔ صدر نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ کو بھرپور سیاسی تائید و حمایت حاصل ہے۔ خصوصی ایلچی نے صدر کو یقین دہانی کرائی کہ اقوام متحدہ پاکستان میں امدادی کارروائیوں میں تعاون اور امداد جاری رکھے گا۔ صدر نے کہا کہ اقوام متحدہ اور عالمی برادری کو چاہئے کہ آگے بڑھ کر پاکستان کے ساتھ بھرپور تعاون کریں تاکہ جنگ سے متاثرہ لوگوں کو بحال کیا جا سکے۔ دریں اثناءگورنر سندھ عشرت العباد سے ملاقات میں صدر نے ہدایت کی کہ حکومت سندھ سپریم کورٹ کے فیصلے کے مطابق عوام کو چینی کی فراہمی 40 روپے کلو فراہمی کے اقدامات کرے تاکہ عوام کو مہنگائی کے اس دور میں ریلیف مل سکے۔ ادھر آصف زرداری نے کہا کہ پاکستان انسداد دہشت گردی مقاصد کے فروغ کے لئے فرانس سمیت اپنے عالمی اتحادیوں کے ساتھ مل کر کام کرتا رہے گا‘ فرانسیسی حکومت کی طرف سے سول جوہری ٹیکنالوجی کے میدان میں عملی تعاون پر غور کے لئے آمادگی قابل تحسین ہے۔ فرانسیسی سفیر ڈینئل جوآن یو سے ایوان صدر میں گفتگو کر رہے تھے۔ فرانسیسی سفیر نے صدر نکولس سرکوزی کا ایک خط بھی صدر تک پہنچایا۔ صدر کے ترجمان نے میڈیا کو بتایا کہ صدر نے اس امر کو اجاگر کیا کہ پاکستان کو سیکیورٹی اور ترقی کے دوہرے چیلنج کا سامنا ہے‘ ان چیلنجوں سے نمٹنے کے لئے فرانس اور عالمی برادری کے فعال رابطوں کی ضرورت ہے۔ ہم صدر سرکوزی کے دورہ پاکستان کے منتظر ہیں۔ صدر نے فرانس پر زور دیا کہ پاکستانی مصنوعات کی یورپین منڈیوں تک رسائی کیلئے اپنا کردار ادا کرے۔
صدر زرداری