پاکستان امریکہ ورکنگ گروپوں کے سٹرٹیجک مذاکرات 3 ماہ میں ہونگے

اسلام آباد (سہیل عبدالناصر) سٹرٹیجک ڈائیلاگ کے تحت پاکستان و امریکہ کے مشترکہ ورکنگ گروپوں کے اجلاس تین ماہ کے اندر منعقد کئے جائیں گے جبکہ چھ ماہ کے اندر سٹرٹیجک ڈائیلاگ وزارتی سطح پر منعقد کیا جائیگا۔ دفتر خارجہ کے ذرائع کے مطابق اسلام آباد میں سرتاج عزیز اور جان کیری کے درمیان مذاکرات کے نتیجہ میں سٹرٹیجک ڈائیلاگ کی بحالی کے فیصلے کے بعد طرفین ورکنگ گروپوں کے اجلاسوں کے انعقاد کا کیلنڈر تیار کر رہے ہیں اور سفارتی ذرائع سے ورکنگ گروپوں کے اجلاسوں کی تاریخوں اور مقامات کا جلد تعین کرلیا جائیگا۔ یہ بھی طے کرنا ہے کہ کن ورکنگ گروپوں کے اجلاس ترجیحی بنیادوں پر پہلے منعقد کئے جائیں۔ واضح رہے کہ سٹرٹیجک ڈائیلاگ کے تحت دفاع، توانائی، معیشت، مالیات اور پاکستانی مصنوعات کی امریکی منڈیوں تک رسائی، تعلیم، انسداد دہشت گردی، سائنس و ٹیکنالوجی، سلامتی و استحکام، جوہری عدم پھیلاﺅ، ذراعت، خواتیں کو با اختیار بنانے، آبی وسائل، صحت اور مواصلات کے 15 سے زائد موضوعات پر ورکنگ گروپ تشکیل دئیے گئے تھے۔ پاکستان کی ترجیح ہوگی کہ توانائی، معیشت و مالیات، دفاع، انسداد دہشت گردی و قانون کے نفاذ جیسے ورکنگ گروپوں کے اجلاس جلد منعقد کئے جائیں۔ یہ امر قابل ذکر ہے کہ سٹرٹیجک ڈائیلاگ معطل ہونے کے باوجود بعض ورکنگ گروپوں میں شامل حکام کے غیررسمی اجلاس منعقد ہوتے رہے ہیں۔ ان ہی میں توانائی کا ورکنگ گروپ بھی شامل ہے جبکہ مشترکہ دفاع ورکنگ گروپ کے ششماہی اجلاس بھی منعقد ہوچکے ہیں۔ البتہ تعطل کے تمام عرصہ میں وزارتی سطح پر کوئی رابطہ نہیں ہوا۔