شاہد خاقان کا بیان افسوسناک ہے، 18 ویں ترمیم پر عمل کیلئے کمیٹیاں بنائیں:فضل الرحمن

شاہد خاقان کا بیان افسوسناک ہے، 18 ویں ترمیم پر عمل کیلئے کمیٹیاں بنائیں:فضل الرحمن

اسلام آباد(آ ن لائن)جمعیت علمائے اسلام ف کے سربراہ نے کہاہے کہ مسلم لیگ (ن) کے وزراءکے بیانات سے لگتا ہے کہ ماضی کی طرح مستقبل میں بھی صرف پنجاب کے مفادات کومدنظر رکھا جارہا ہے۔ وزیر پٹرولیم کا 18 ویں ترمیم میں صوبوں کو وسائل کی تقسیم کی مخالفت میں بیان دینے پر افسوس ہے، 18ویں ترمیم پر مکمل عملدرآمد کےلئے فی الفور کمیٹیاں تشکیل دی جائیں، 18ویں ترمیم کو نظر اندا ز نہیں کرنے دینگے۔ ان خیالات کا اظہار انہوںنے وفاقی وزیر پٹرولیم شاہد خان عباسی کے گیس کی تقسیم کے بارے میں 18 ویں ترمیم کے مخالف بیان دینے پر اپنے رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کیا جس میں وفاقی وزیر نے گیس کی تقسیم کے حوالے سے 18ویں ترمیم میں تسلیم شدہ فارمولے کو تبدیل کرنے کا عندیہ دیاہے۔ مولانا فضل الرحمان نے کہا 18ویں ترمیم میں تسلیم شدہ فارمولا گیس کے تحت گیس پر پہلا حق اس صوبے کے عوام کا ہے جہاں سے گیس کی پیداوار ہوتی ہے۔ انہوں نے کہا 18ویں ترمیم صوبوں اور مرکز کے درمیان اتفاق رائے سے فارمولا واضح کیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ 50فیصد انرجی صوبوں کو دینے کا تقسیم کار کو 18 ویں ترمیم میں تسلیم کیا گیا ہے لیکن اسکو عملی جامہ پہنانے کیلئے کوئی میکینزم نہیں بنایا جارہا۔ انہوں نے کہا پیٹرولیم وزارت ، دوسرے پبلک سیکٹر انرجی ادارے مناسب طریقے سے نہیں چلائے جارہے۔انہوں نے کہا آرٹیکل 158 سے 162 تک پر نظر ثانی کی ضرورت ہے تاکہ 18ویں ترمیم پر مکمل عمل داری کیلئے متعلقہ اداروں کیلئے کمیٹیاں اور ادارے بنائی جائے۔انہوں نے کہا پاکستان مسلم لیگ (ن) کو اختیارات اور طاقت کا ارتکاز صوبوں کی قیمت پر نہیں رکھنا چاہئے۔انہوں نے کہا کوئی بھی مسئلہ جو اٹھارویں ترمیم کی وجہ سے پیدا ہو تا ہے اس کو اسی ترمیم کی روح کے مطابق حل کیا جائے نہ کہ اٹھارویں ترمیم کونظر انداز کیاجائے۔