وفاقی کابینہ کی کمیٹی برائے نجکاری نے 31 اداروں کی نجکاری کی منظوری دیدی

وفاقی کابینہ کی کمیٹی برائے نجکاری نے 31 اداروں کی نجکاری کی منظوری دیدی

اسلام آباد (نمائندہ خصوصی + نوائے وقت رپورٹ + ایجنسیاں) وفاقی کابینہ کی کمیٹی برائے نجکاری نے 31 اداروں کی نجکاری کی منظوری دیدی۔ اداروں میں پی آئی اے‘ ریلوے، بجلی کی تقسیم کار کمپنیاں اور پاکستان سٹیل شامل ہیں۔ وزیر خزانہ اسحق ڈار کا کہنا ہے ملازمین کے حقوق کا ہر صورت تحفظ کیا جائے گا۔ وفاقی وزیر خزانہ کی زیر صدارت کابینہ کی کمیٹی برائے نجکاری کا اجلاس ہوا۔ ذرائع کے مطابق اجلاس میں فیصلہ کیا گیا۔ دیگر اداروں میں یوٹیلٹی سٹور‘ ایس ایم ای بنک‘ پاکستان منرل ڈویلپمنٹ کارپوریشن اور نیشنل انشورنس کارپوریشن میں نجکاری ہو گی۔ نمائندہ خصوصی کے مطابق اجلاس میں نجکاری کمشن نے ایک فہرست کابینہ کمیٹی کے سامنے پیش کی جس کی نجکاری کی جانا ہے۔ کمیٹی نے تفصیلی طور پر فیصلہ کیا ان اداروں کی نجکاری کا عمل شروع کیا جائے۔ ذرائع نے بتایا اجلاس میں 31 اداروں کی نجکاری کا عمل شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ ان میں پی آئی اے‘ پاکستان سٹیل ملز اور بجلی کے متعدد تقسیم کار کمپنیاں شامل ہیں۔ وفاقی حکومت آئی ایم ایف کے ساتھ حالیہ پیکیج طے کرتے ہوئے پی آئی اے اور دوسرے اداروں کی نجکاری کرنے کی شرط کے طور پر تسلیم کر چکی ہے جبکہ پی آئی اے نجکاری کا عمل 30 جون 2014ء سے قبل مکمل کرنا ضروری ہے۔ فہرست میں شامل ان اداروں کے 26% سرکاری شیئرز فروخت کیلئے پیش کئے جائیں گے۔ جبکہ بعض کا انتظامی کنٹرول بھی نجی شعبے کے حوالے کر دیا جائے گا۔ ایم سی بی‘ یو بی ایل کے مزید شیئر فروخت کیلئے پیش ہوں گے یہ دونوں بنک پہلے ہی نجی تحویل میں ہیں۔ نوائے وقت رپورٹ کے مطابق اجلاس میں یو بی ایل اور ایم سی کے مزید 26% حکومتی حصص فروخت کرنے کا فیصلہ بھی کیا گیا ہے۔ وفاقی وزیر خزانہ سینیٹر اسحاق ڈار کی صدارت میں موبائل سروس تھری جی لائسنس کی نیلامی  کی مشاورتی کمیٹی کے اجلاس میں سفارشات مرتب کرلی گئیں جو حتمی منظوری کے لئے وزیراعظم کو پیش کی جائیں گی۔ اجلاس میں وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی کی طرف سے پالیسی ہدایات کے متعلق سفارشات غور کے لئے پیش کی گئیں۔ دریں اثناء ایک دوسرے اجلاس میں پی ٹی اے کی طرف سے غیر قانونی فون کالز (گرے ٹریفک) کی روک تھام کے لئے کئے گے انتظامات کا جائزہ لیاگیا۔ اجلاس میں ’’گرے ٹریفک‘‘ کے خلاف شکایات کے اندراج کے لئے کال سینٹر قائم کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔اجلاس میں یہ فیصلہ بھی کیا گیا  عوام کا شعور بیدار کرنے کے لئے مہم بھی شروع کی جائے گی۔