شاہ زیب قتل کے ملزموں کو معافی 62 فیصد پاکستانیوں نے مسترد کر دی

اسلام آباد (آئی این پی) شاہ زیب قتل کیس میں شاہ زیب کے والدین کی جانب سے ملزمان کو معافی دینے پر 62 فیصد پاکستانیوں نے سخت ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے اسے مسترد کر دیا اور کہا کہ ملزموں کو معاف کر کے ٹھیک نہیں کیا گیا۔ 38 فیصد شہریوں کی طرف سے شاہ زیب کے والدین کی ملزمان کو معافی دینے کے فیصلے کی حمایت کی گئی ہے۔ گیلپ کی طرف سے اس حوالے سے کئے گئے سروے کی جمعرات کو جاری رپورٹ کے مطابق ملک بھر سے 2 ہزار سے زائد افراد سے سروے کیا گیا۔ سروے کے دوران پہلا سوال تھا کہ کیا آپ شاہ زیب قتل سے متعلق کچھ جانتے ہیں یا نہیں جس پر 65 فیصد نے ہاں جبکہ 35 فیصد نے لاعلمی کا اظہار کیا۔ سوال کا مثبت جواب دینے والے رائے کنندگان سے مزید سوال کیا گیا کہ کیا شاہ زیب کے والدین نے قاتلوں کو معاف کر کے اچھا کیا یا برا جس پر 62 فیصد لوگوں نے کہا کہ برا کیا ہے جبکہ 38 فیصد افراد کا کہنا تھا کہ ملزمان کو معافی دے کر اچھا کیا ہے۔ ملزمان کو معافی دینے کے معاملے پر حیرت انگیز طور پر سب سے زیادہ تنقید بلوچستان کے رائے کنندگان نے کی‘ بلوچستان کے 78 فیصد رائے کنندگان نے اس بات کو برا قرار دیا کہ شاہ زیب کے قاتلوں کو معاف کیا جائے۔ پنجاب کے 66 فیصد لوگوں نے‘ سندھ کے 60 فیصد عوام نے جبکہ کے پی کے کے صرف 38 فیصد رائے کنندگان نے شاہ زیب کے قاتلوں کو معافی کے معاملے پر تنقید کی۔ سروے کے مطابق 45 فیصد رائے کنندگان نے کہا کہ شاہ زیب قتل کیس میں معافی کے معاملے پر دیت کی 30 کروڑ رقم لی گئی جبکہ 25 فیصد لوگوں نے کہا کہ ملزمان کو معافی فی سبیل اﷲ ہوئی اور 30 فیصد عوام نے اس معاملے میں لاعلمی کا اظہار کیا مجموعی طور پر 62 فیصد پاکستانیوں نے شاہ زیب قتل کیس میں ملزمان کو معافی کے معاملے کو انتہائی برا تصور کیا۔
معافی مسترد کر دی