ایف بی آر نے 130ارب سے زائد ریفنڈ کی ادائیگیاں روک دیں

اسلام آباد (آن لائن) ایف بی آر نے ٹیکس ہدف کو عبور رکرنے کیلئے برآمد کنندگان کے 130 ارب سے زائد ریفنڈ کی ادائیگیاں روک دی ہیں20 ارب روپے ٹیکس ریفند کی ادائیگی کے چیک تین ماہ بعد کیش کئے جا سکیں گے۔ 110 ارب روپے کے ریفنڈادا نہ کئے جانے کی وجہ سے پاکستان کی برآمدات میں کمی ہو رہی ہے ۔پاکستان کسٹمز کے ذمے بھی کروڑوں روپے برآمد کنندگان کے واجب الادہ ہیں۔ٹریڈ ڈیویلپمنٹ اتھارٹی آف پاکستان (ٹی ڈی اے پی) کے ذرائع کے مطابق گذشتہ سال پاکستان کے مختلف سیکٹروں کی جانب سے بیرون ممالک 25 ملین سے زائد کی مصنوعات باہر بجھوائی گئی تھیں مگر حالیہ مالی سال کے 9 ماہ کے دوران برآمدات میں6 فیصد کمی واقع ہوئی ہے جس کی بنیادی وجہ سے پاکستانی برآمدکنندگان کے اربوں روپے کے ریفنڈ کلیمز ایف بی آر نے روک رکھے ہیں جبکہ صرف 20 ارب روپے کے چیک دے دئیے گئے ہیں اور وہ بھی تین ماہ کے بعد کیش ہو سکیں گے۔ انہوں نے بتایاکہ پاکستان کسٹمز کے ذمے بھی 6 سے7 کروڑ روپے ریبیٹ کی صورت میں بقایا ہیں اور سرمائے کی بندش کی وجہ سے برآمد ات میں کمی واقع ہو رہی ہے۔ انہوں نے بتایاکہ پاکستان کی ٹیکسٹائل سیکٹر کی برآمدات میں بھی کمی واقع ہوئی ہے۔