قائمہ کمیٹی میں حاجی پرویز 6 مئی کو طلب‘ جان کا خطرہ ہے: ڈاکٹر نعیم

اسلام آباد (خبر نگار + نیوز ایجنسیاں + ریڈیو نیوز) قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے تعلیم نے جعلی پرچہ کیس میں مسلم لیگ (ن) کے رکن قومی اسمبلی حاجی پرویز خان کو 6 مئی کو ہونے والے اجلاس میں طلب کر لیا ہے‘ کمیٹی نے راولپنڈی تعلیمی بورڈ کے چیئرمین‘ چھاپہ مار ٹیم کے سربراہ ڈاکٹر نعیم باجوہ اور حاجی پرویز کی جگہ امتحان دینے والے ان کے بھتیجے بلال کو بھی طلبی کے نوٹس جاری کئے ہیں۔ چیئرمین قائمہ کمیٹی عابد شیر علی نے کہا ہے کہ کمیٹی ایک سے دو ہفتے میں اس معاملے کا فیصلہ کر دے گی۔ اجلاس میں فرح ڈوگر کیس کے حوالے سے جسٹس ڈوگر کو بھی بلایا گیا ہے۔ ادھر آئی این پی کے مطابق حاجی پرویز نے پریس کانفرنس میں حلفاً کہا ہے کہ مجھے جعلی سکینڈل میں پھنسایا گیا‘ الزامات ثابت ہو گئے تو قومی اسمبلی کی ر کنیت سے مستعفی ہو جاؤں گا‘ ابھی تک قائمہ کمیٹی میں پیش ہونے کی اطلاع نہیں ملی۔ دوسری جانب انسپکٹر امتحانات ڈاکٹر نعیم باجوہ نے کہا ہے کہ (ن) لیگ کی انکوائری کمیٹی اپنے ایم این اے کو بچانے اور مجھے پھنسانے کی کوشش کر رہی ہے‘ مجھے جان کا خطرہ ہے اس لئے میں اہلخانہ سمیت دوسری جگہ منتقل ہو گیا ہوں‘ تحفظ فراہم کیا جائے جبکہ مسلم لیگ (ن) کی تحقیقاتی کمیٹی کے چیئرمین پرویز رشید نے ڈاکٹر نعیم کے الزامات مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ 11 گھنٹے کی پیشی میں انہوں نے یہ معاملہ کیوں نہیں اٹھایا۔
قائمہ کمیٹی / حاجی پرویز