راولپنڈی: 2کمسن بہنیں فائرنگ سے قتل، ماں کی پھندا لگی نعش برآمد

راولپنڈی: 2کمسن بہنیں فائرنگ سے قتل، ماں کی پھندا لگی نعش برآمد

راولپنڈی (اپنے سٹاف رپورٹر سے ) غوثیہ چوک گلشن شفیع کالونی میں ماں کی گلے میں پھندا لگی نعش چھت سے لٹکی ملی جبکہ دو کمسن بچیاں پستول سے فائرنگ کر کے قتل کر دی گئیں۔ یہ تہرے قتل کی لرزہ خیز واردات ہے یا والدہ کے خود کشی سے قبل بچیوں کو بھی مار دینے کا واقعہ، پولیس کئی پہلوئوں سے اس سانحہ کی تفتیش کر رہی ہے۔ ریسکیو1122نے بتایا کہ اتوار کو دن ایک بجکر37 منٹ پر اطلاع دی گئی تھی کہ دوکمسن بچیوں اور ان کی والدہ کی نعشیں گھر میں پڑی ہیں جس کے ساتھ ریسکیو1122 کی ٹیم جائے وقوعہ ٹاہلی موہری روڈ گلشن شفیع کالونی پہنچی جہاں گھر کے کمرے میں 9 سالہ بچی میمونہ اور 6 سالہ بچی ردا کی نعشیں پڑی تھیں۔ بچیوں کو فائرنگ کرکے قتل کیا گیا جبکہ ان کی والدہ 30 سالہ روبینہ کی نعش گلے میں پھندا لگی چھت کے آہنی ہک سے لٹک رہی تھی۔ متوفیہ کے شوہر پرویز اقبال عرف نعیم کو حراست میں لے لیا گیا ہے جو موبائل فون کی دکان کرتا ہے۔ دریں اثناء ایس ایچ او تھانہ سول لائن اصغر علی گورائیہ  نے بتایا کہ بچیوں کے سروں میں پستول کی ایک ایک گولی لگی ہے جبکہ تیسری گولی پستول میں پھنسی ہوئی تھی یہاں سوال یہ ہے کہ آیا عورت نے بچوں کو مارنے کے بعد گولی نہ چلنے پر خودکو پھندہ دے کر لٹکایا یا اس کے شوہر نے پہلے بچیوں کو قتل کیا اور جب تیسری گولی بیوی پر نہ چلی تو اس نے روبینہ کو پھندا دے کر نعش چھت سے لٹکائی۔ پولیس نے مقتول بچیوں کے ماموں اور متوفیہ کے بھائی خورشید خان کی درخواست پر پرویز اقبال‘ اس کی دوسری بیوی سمیرہ، بہن خالدہ اور بھائی ندیم کے خلاف مقدمہ درج کرلیا ہے۔ آن لائن کے مطابق مقتولہ کی والدہ روبینہ کا کہنا ہے داماد نے دوسری شادی کر لی تھی واقعہ میں وہی ملوث ہے۔