سپریم کورٹ، الیکشن کمشن کے شیڈول پر بلدیاتی انتخابات کیلئے تیار ہیں: رانا ثنائ

سپریم کورٹ، الیکشن کمشن کے شیڈول پر بلدیاتی انتخابات کیلئے تیار ہیں: رانا ثنائ

سانگلاہل + اسلام آباد (نمائندہ نوائے وقت + نیوز ایجنسیاں)صوبائی وزیر بلدیات وقانون رانا ثناءاللہ خاں نے کہا ہے کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کی قیادت اور حکومت ملک کو درپیش مسائل کے حل کیلئے قومی اتفاق رائے پیدا کرنے کی کوشش میں مصروف ہے، قومی اتفاق رائے پیدا کرنا ملک وقوم کی بہتری کا تقاضا ہے،مگر تحریک انصاف ملک کو مسائل کی بھٹی میں جھونک رہی ہے،وہ مسلم لیگ (ن) یوتھ ونگ پنجاب کے صدر میاں غلام حسین شاہد اور ضلعی صدر ننکانہ چودھری امتیاز احمد کاہلوں کی قیادت میں وفد سے باتیں کر رہے تھے۔راناثناءاللہ نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے ڈرون حملوں کے حوالے سے تمام ممکنہ اقدامات اٹھائے ہیںجن میں سفارتی سطح پر احتجاج،بین الاقوامی کمیونٹی کو معاملہ کی سنگینی کا ادراک اور قومی سطح پر اتفاق رائے کی بیداری شامل ہے۔ ہماری منزل ملکی ترقی و خوشحالی اور اداروں کا استحکام ہے جس پر پہنچ کر ہی دم لیں گے۔ نواز شریف اور شہباز شریف نے کبھی عوام کو اپنے سے الگ نہیں سمجھا،عوامی مسائل کیلئے وہ دن رات ایک کئے ہوئے ہیں۔ مسلم لیگ (ن) یوتھ ونگ کے کارکن ہمارا ہراول دستہ ہیں،آئندہ بلدیاتی انتخابات میں مخالفین کو اپنی حیثیت کا پتہ چل جائیگا۔علاوہ ازیں ایک نجی ٹی وی کوانٹرویو میں رانا ثناءاللہ خان نے کہا کہ پنجاب بلدیاتی انتخابات جماعتی بنیادوں پر ممکن ہی نہیں۔ جماعتی بنیادوں پر انتخابات سے پارٹیوں کو نقصان پہنچے گا، سپریم کورٹ اور الیکشن کمشن کے شیڈول پر انتخابات کرانے کیلئے تیار ہیں۔ صوبائی حکومت سپریم کورٹ کے احکامات کے مطابق بلدیاتی انتخابات کرائیگا۔ پی پی بطور اپوزیشن نواز شریف کی روایت کو آگے بڑھا رہی ہے۔ عمران خان خیالاتی باتیں کرتے ہیں انہیں حقیقت کا پتہ ہی نہیں اگر پی ٹی آئی مہنگائی کے خلاف جلسہ پر رقم خرچ کرنے کی بجائے غریب لوگوں میں بانٹ دے تو اس سے ملک کے 7 فیصد لوگ سطح غربت سے اوپر آ سکتے ہیں۔ جب تک دہشت گردوں کو سہولت فراہم کرنے والے افراد اور نیٹ ورک موجود نہ ہوں تو کوئی دہشت گردی کا واقعہ نہیں ہو سکتا۔ طالبان سے مذاکرات کیلئے حکومت اور عوام سنجیدہ ہیں حکومت چاہتی ہے کہ مسئلہ کا حل بغیر آپریشن کے ہوجائے۔ یہ مسئلہ ڈرون گرانے سے حل نہیں ہو سکتا پاکستان کے پاس ڈرون گرانے کی صلاحیت موجود ہے اگر یہ مسئلہ نیٹو سپلائی روکنے کی بات کرتے ہیں تو پھر سات ماہ نیٹو سپلائی روکی گئی لیکن ڈرون حملے نہیں روکے۔
رانا ثناءاللہ