اگلے سال مالاکنڈ ٹنل منصوبہ شروع ہو گا، 78 ملین ڈالر امداد دینگے: سفیر جنوبی کوریا

اگلے سال مالاکنڈ ٹنل منصوبہ شروع ہو گا، 78 ملین ڈالر امداد دینگے: سفیر جنوبی کوریا

اسلام آباد (جاوید صدیق) پاکستان میں جنوبی کوریا کے سفیر ڈاکٹر سالگ جانگ ہان نے کہا ہے اگلے سال جنوبی کوریا کے تعاون سے مالاکنڈ ٹنل منصوبے پر کام شروع ہوجائے گا۔ جنوبی کوریا مالاکنڈ ٹنل کے لئے 78 ملین ڈالر کی مالی امداد فراہم کرے گا۔ جنوبی کوریا کے سفیر نے وقت نیوز چینل کے پروگرام ایمبیسی روڈ میں انٹرویو دیتے ہوئے کہا مالاکنڈ ٹنل کی تعمیر سے پاکستانی صنعت کاروں اور تاجروں کو وسط ایشیا تک تجارتی سہولت مل جائے گی۔ پاکستان میں جنوبی کوریا کے تعاون سے توانائی کے شعبوں میں سرمایہ کاری کے حوالے سے سوالات کا جواب دیتے ہوئے جنوبی کوریا کے سفیر نے کہا کہ کوریا کی کمپنیاں پاکستان میں پانی سے بجلی پیدا کرنے کے منصوبوں پر کام کر رہی ہیں۔ کورین کمپنیاں پانی سے 1500میگاواٹ بجلی پیدا کریں گی۔ مجموعی طور پر جنوبی کوریا بجلی کے پیداواری منصوبوں پر 3ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کرے گا۔ جنوبی کوریا کے سفیر نے بتایا لواری ٹنل کے منصوبہ اور کراچی پورٹ میں توسیع کے منصوبے پر جنوبی کوریا کی کمپنیاں کام کر رہی ہیں۔ جنوبی کوریا پاکستان میں بجلی کی ٹرانسمیشن لائنز بچھانے پر 230 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کرے گا۔ پاکستان میں موٹر ویز کی تعمیر کے حوالے سے سوال کے جواب میں جنوبی کوریا کے سفیر نے کہا اسلام آباد سے لاہور تک موٹر وے کی تعمیر پاکستان اور جنوبی کوریا میں تعاون اور دوستی کا ایک سنگ میل ہے۔ اس منصوبے سے پاکستان میں جدید ٹرانسپورٹ کے نظام کا آغاز ہوا۔ ریلوے نظام کو بہتر بنانے کے سلسلے میں سوال کے جواب میں انہوں نے کہا میری ریلوے کے وزیر سے ملاقات ہوئی ہے۔ جنوبی کوریا پاکستان ریلوے کو بہتر بنانے کے لئے بھی مدد دینے کے لئے تیار ہے۔ پاکستان اور جنوبی کوریا کے درمیان تجارت کو فروغ دینے کے سوال کے جواب میں انہوں نے سفیر ڈاکٹر سالگ جانگ ہان نے کہا اس وقت پاکستان اور جنوبی کوریا میں تجارت کا سالانہ حجم ایک ارب 70کروڑ ڈالر ہے۔ میں اپنے عہد سفارت میں پاکستان اور جنوبی کوریا کے درمیان سالانہ تجارت کو پانچ ارب ڈالر تک لے جانے کا منصوبہ رکھتا ہوں۔ جنوبی کوریا کے سفیر نے بتایا 4 اور 5 دسمبر تک اسلام آباد میں ایک خصوصی سیمینار ہو گا جس میں جنوبی کوریا کی 29 کمپنیوں کے 35 نمائندے شرکت کریں گے۔ میری کوشش ہے زیادہ سے زیادہ جنوبی کوریا کی کمپنیوں کو پاکستان سے متعارف کرایا جائے۔ جنوبی کوریا کے سفیر نے شمالی کوریا کے ایٹمی پروگرام کو دنیا کے لئے خطرہ قرار دیا اور کہا کہ انہیں توقع ہے 2020ءکے بعد جنوبی اور شمالی کوریا میں اتحاد ہوجائے گا کیونکہ شمالی کوریا ایک دیوالیہ کمپنی کی طرح ختم ہو جائے گا۔
سفیر