سینٹ قائمہ کمیٹی میں پورٹ قاسم کی 1250 ایکڑ اراضی پر نیوی کے قبضے کا انکشاف

سینٹ قائمہ کمیٹی میں پورٹ قاسم کی 1250 ایکڑ اراضی پر نیوی کے قبضے کا انکشاف

اسلام آباد (آئی این پی) سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے پورٹس اینڈ شپنگ کے اجلاس میں کراچی میں پورٹ قاسم کی 1250 ایکڑ زمین پر پاکستان نیوی کے قبضہ کرنے کا انکشاف ہوا ہے، 1700 سے زائد ایکڑ پر دیگر سرکاری محکموں اور نجی قبضہ گروپوں نے قبضہ کررکھا ہے۔ مسلم لیگ (ق) کے رہنما حلیم صدیقی کو ٹرمینل کی تعمیر کا 5 ارب کا ٹھیکہ دینے اور این ایل سی کو ذیلی ٹھیکیداروں سے کام کرانے کی اجازت دینے پر قائمہ کمیٹی نے شدید تحفظات کا اظہار کیا۔ علاوہ ازیں قائمہ کمیٹی نے پلاننگ ڈویژن کو گوادر پورٹ اتھارٹی میں آنے والی پاکستان نیوی کی 500 ایکڑ اراضی کے بدلے میں 47.5 کروڑ روپے ادائیگی کی ہدایت کردی۔ سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے پورٹس اینڈ شپنگ کا اجلاس پیر کو یہاں چیئرمین سردار فتح محمد حسنی کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہاﺅس میں منعقد ہوا، اجلاس میں قائمہ کمیٹی کے ارکان کو گوادر پورٹ اتھارٹی اورپاکستان نیوی کے مابین 500 ایکڑ اراضی کے تنازعہ پر ایڈیشنل چیف سیکرٹری بلوچستان اسلم شاکر بلوچ نے بریفنگ دی۔ انہوں نے کہا کہ گوادر پورٹ کے قریب پاکستان نیوی کی 500 ایکڑ زمین پہلے سے موجود تھی جوکہ بندرگاہ کی حدود میں آگئی جبکہ پاکستان نیوی کو اس کے بدلے تھوڑی ہی دور 1000 ایکڑ زمین نجی مالکان سے دلوانے کی پیشکش کی گئی۔ جس پر 47.5 کروڑ خرچ آئیں گے جبکہ اس حوالے سے چیف سیکرٹری بلوچستان کی سربراہی میں کمیٹی کام کررہی ہے۔ پاکستان نیوی کے حکام نے قائمہ کمیٹی کے اجلاس میں مجوزہ مقام پر 1000 ایکڑ اراضی لینے پر رضامندی ظاہر کی۔ جس پر چیئرمین سردار فتح محمد حسن نے پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ ڈویژن کو زمین کی خریداری کیلئے 47.5 کروڑ روپے جاری کرنے کی ہدایت کردی۔ مزید برآں پورٹ قاسم اتھارٹی کے چیئرمین سعید احمد خان نے قائمہ کمیٹی کے ارکان کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ پاکستان نیوی نے کراچی میں پورٹ قاسم کی 1250 ایکڑ کمرشل اراضی پر قبضہ کررکھا ہے جبکہ مقدمہ عدالت میں زیرسماعت ہے ، علاوہ ازیں پورٹ قاسم کی 1700 ایکڑ سے زائد اراضی دیگر سرکاری محکموں و نجی قبضہ گروپوں کے قبضے میں ہے جبکہ دوران اجلاس پورٹ قاسم اتھارٹی کی جانب سے مسلم لیگ (ق) کے رہنما کیپٹن (ر) حلیم صدیقی کو پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کی بنیاد پر کول اینڈ کلنکر سیمنٹ ٹرمینل کی تعمیر کا 5 ارب روپے کا کنٹریکٹ دینے میں بے قاعدگیوں پر قائمہ کمیٹی کے ارکان نے اعتراض اٹھایا اور چیئرمین پورٹ قاسم اتھارٹی کو مفصل رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کردی۔
قائمہ کمیٹی