کسٹم کے افسروں اور اہلکاروں کیلئے ایوارڈ رولز کا نوٹیفکیشن جاری کردیا گیا

اسلام آباد (عترت جعفری) ایف بی آر نے کسٹمز کے افسروں اور اہلکاروں کے لئے ایوارڈ رولز کا نوٹیفکیشن جاری کردیا ہے جس کے تحت کسٹمز نان پیڈ یا ٹمپرڈ گاڑیاں پکڑنے کی صورت میں 18 سو سی سی سے زیادہ قوت کی گاڑی پر 30 ہزار روپے اور اس سے کم سی سی کی حامل گاڑی پر 12 ہزار روپے انعام ملے گا۔ نئے ایوارڈ رولز میں بعض اہم تبدیلیاں کی گئی ہیں۔ ٹیکس اورڈیوٹی کی چوری پکڑنے کی کیٹگری میں پانچ لاکھ روپے تک کی سمگل شدہ چیزیں پکڑنے پر اس پر لگنے والی ڈیوٹی اور ٹیکس کے 20 فیصد کے مساوی انعام ملے گا۔ 5 لاکھ سے 10 لاکھ روپے تک کی سمگل شدہ چیزیں پکڑنے پر ایک لاکھ روپے بعد 5 لاکھ روپے سے زائد رقم پر لگنے والی ڈیوٹی کے دس فیصد کے برابر انعام دیا جائے گا جبکہ 10 لاکھ سے زائد مالیت کی اشیاءپکڑنے پر ڈیڑھ لاکھ روپے نقد اور 10 لاکھ روپے سے زائد جتنی رقم بنتی ہے اس کے پانچ فیصد کے برابر انعام ملے گا۔ نئے رولز میں ایک اہم تبدیلی یہ کی گئی ہے کہ اب انعام مکمل ڈیوٹی اور ٹیکس کی وصولی کے بعد ملے گا۔ اس سے قبل انعام رپورٹ درج ہونے کے فوری بعد کلیم کرلیا جاتا تھا جبکہ اشیاءبعدازاں قانونی قرار پانے پر چھوڑنی پڑتی تھیں۔ ایوارڈ کی رقم اتنی تیزی سے وصول کی جاتی تھی کہ بعض افسروں کے نام کے ساتھ ملازمین نے لفظ ”ایوارڈ“ کا اضافہ کردیا تھا۔ ایسے معاملات میں جہاں ڈیوٹی اور ٹیکس کی مجموعی رقم کا نصف قومی خزانے میں جائے گا تو اسی تناسب سے ایوارڈ کی منظوری دی جائے گی۔ جو اشیاءقانونی عمل پوری ہونے کے بعد نیلام کی جاتی ہیں اس صورت میں قومی خزانے میں جمع کرائی جانے والی رقم کے 15 فیصد کے برابر کسٹمز افسر‘ اہلکار یا مخبر کو انعام ملے گا۔ شراب‘ منشیات‘ اسلحہ وغیرہ پکڑے جانے کی صورت میں 20 ہزار روپے تک کی مالیت کے 30 فیصد اور 20 ہزار روپے سے 5 لاکھ تک چھ ہزار روپے بمعہ 20 ہزار روپے سے زائد رقم کے دس فیصد کے برابر انعام ملے گا۔ کسٹمز افسر یا اہلکار کو کسی بھی کیس میں اس کی تین سال کی بنیادی تنخواہ سے زائد رقم انعام کے طور پر نہیں دی جاسکے گی۔ انعام کی مجموعی رقم کا 40 فیصد افسر‘ 40 فیصد سٹاف‘ 15 فیصد مخبر اور پانچ فیصد ویلفیئر فنڈ میں جائے گا۔ ایوارڈ کی منظوری کا اختیار رکھنے والی اتھارٹی فیلڈ فارمیشن میں ایک کمیٹی بنائے گی جو کم از کم گریڈ 19 کے افسر کی سربراہی میں کام کرے گی جبکہ اس میں گریڈ 18 کے دو افسر شامل ہوں گے۔ کمیٹی ایوارڈ کی سفارش مجاز اتھارٹی کو کرے گی۔