ورکرز ویلفیئر فنڈ میں خورد برد، رپورٹ طلب

اسلام آباد (اے پی پی) سپریم کورٹ نے نیشنل بنک میں کارکردگی ایوارڈ کے نام پر ورکرز ویلفیئر فنڈ میںکروڑوں روپے کے خورد برد کے معاملہ پر نیب اور نیشنل بنک سے تفصیلی رپورٹ طلب کرتے ہوئے مزید سماعت 13 اگست تک ملتوی کر دی۔ جسٹس اعجاز افضل خان اور جسٹس عظمت سعید شیخ پر مشتمل دو رکنی بنچ نے درخواست کی سماعت کی۔ اس موقع پر درخواست گذار کے وکیل حشمت حبیب نے عدالت کو بتایا کہ ایف آئی اے کے حکام جان بوجھ کر نیشل بنک کے صدر قمر حسین کو شامل تفتیش نہیں کر رہے ہیں اور جن 15 افراد کے خلاف چالان پیش کیا گیا ہے ان میں سے 13 کو مفرور قرار دے کر اپنی جان چھڑا لی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ نیشنل بنک کے صدر قمر حسین نے 2008ءسے لے کے 2011ءتک دو کروڑ 20 لاکھ روپے حاصل کئے۔ نیشنل بنک کے وکیل انور منصور نے عدالت کو بتایا کہ بنک کے صدر نے جو رقم حاصل کی وہ پرفارمنس ایوارڈ کی مد میں حاصل کی۔ عدالت نے نیب کو بھی ہدایت کی کہ ان 16 افراد کے نام اور دیگر تفصیل عدالت کو پیش کی جائے جنہوں نے 7 کروڑ روپے سے زائد رقم حاصل کی۔ مزید سماعت 13 اگسٹ تک ملتوی کر دی گئی۔