ہریانہ مسجد کی تعمیر پر مسلم کش فسادات‘ درجنوں گھر دکانیں نذر آتش سینکڑوں دربدر

ہریانہ مسجد کی تعمیر پر مسلم کش فسادات‘ درجنوں گھر دکانیں نذر آتش سینکڑوں دربدر

نئی دہلی (نیٹ نیوز) بھارتی ریاست ہریانہ میں ہونیوالے مسلم کش فسادات میں کئی سو مسلمان گھرانے بے گھر ہو گئے۔ 150 سے زائد مسلمانوں نے رات ہریانہ پولیس سٹیشن میں گزاری۔ متاثرین نے کہا ہے اگر حکومت نے مسئلہ حل نہ کیا تو وہ نئی دہلی تک احتجاجی مارچ کرینگے۔ تفصیلات کے مطابق ہریانہ کے گا¶ں اٹالی میں ہونےوالے مسلم کش فسادات میں کئی مسلمان گھرانے بے گھر ہو گئے۔ گزشتہ روز 150 سے زائد مسلمانوں نے رات ہریانہ پولیس سٹیشن میں گزاری، سخت گرمی میں بچے بھی بیمار پڑنے لگے۔ متاثرین کو کپڑوں اور خوراک کی کمی کا سامنا ہے۔ واضح رہے کہ 4 روز پہلے گاﺅں اٹالی میں ہندو انتہا پسند تنظیم راشٹریہ سیوک سنگھ کے 2 ہزار سے زائد شرپسندوں نے ایک زیر تعمیر مسجد پر حملہ کر کے توڑ پھوڑ کی۔ فساد کے نتیجے میں 25 سے زائد مسلمان شدید زخمی ہوئے۔ کلہاڑیوں، ڈنڈوں، چھریوں سے لیس حملہ آوروں نے مسلمانوں کے درجنوں گھروں، دکانوں اور گاڑیوں کو آگ لگائی۔ اس موقع پر موجود پولیس تماشا دیکھتی رہی۔
مسلم کش فسادات