اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ بندی کے باوجود اسرائیلی جنگی طیاروں کی غزہ پر بمباری کا سلسلہ جاری

غزہ (اے پی پی) اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ بندی کے باوجود اسرائیلی جنگی طیاروں کی طرف سے غزہ کے مختلف علاقوں پر وقفے وقفے سے بمباری کا سلسلہ جاری ہے۔ ان حملوں میں چھ بچوں سمیت نو فلسطینی زخمی ہو گئے جبکہ ڈیووس میں اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل نے غزہ کیلئے عالمی برادری نے 62 کروڑ ڈالر امداد کی اپیل کی ہے۔ فلسطینی حکام کے مطابق اسرائیلی جنگی طیاروں نے جمعرات کو فلسطینی علاقے خان یونس میں حماس کے ایک سینئر رہنما کے گھر پر بمباری کی جس کے نتیجے میں چھ بچوں سمیت 9 فلسطینی زخمی ہو گئے۔ اس کے علاوہ اسرائیلی طیاروں نے جنوبی غزہ کے علاقے رفاہ پر بھی شدید بمباری کی تاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ ان حملوں میں اسلحہ ساز فیکٹریوں کو بھی نشانہ بنایا گیا۔ اسرائیلی فوجی ترجمان نے بمباری کی تصدیق کرتے ہوئے الزام عائد کیا ہے کہ اس سے پہلے حماس کی جانب اسرائیل پر راکٹ حملہ کیا گیا تھا جس کے جواب میں حماس کے ٹھکانے پر بمباری کی گئی۔ دوسری جانب اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل بان کی مون نے ڈیووس میں اپنے خطاب میں غزہ کی تعمیر و نو کیلئے عالمی برادری سے 62 کروڑ ڈالر امداد کی اپیل کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ امداد سے غزہ میں خوراک کی صورتحال بہتر بنانے اور اس کی تعمیر نو میں مدد ملے گی۔