چین میں 42 سالہ شخص 11 سال سے پنجرے میں قید ہے

چین میں 42 سالہ شخص 11 سال سے پنجرے میں قید ہے

بیجنگ (اے ایف پی) چین میں دماغی عارضے میں مبتلا ایک 42 سالہ شخص گذشتہ 11 سال سے ایک پنجرے میں قید ہے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق یویوان ہونگ نامی اس شخص نے ایک 13 سالہ لڑکے کو مار مار کر ہلاک کر دیا تھا جس پر اسے گرفتار کر لیا گیا تاہم صوبہ جیانگ ژی کے عدالتی حکام نے ایک سال بعد اسے یہ کہتے ہوئے رہا کر دیا تھا کہ دماغی عارضے میں مبتلا ہونے کے باعث یہ جو کچھ کرتا ہے اس کا قانونی طور پر ذمہ دار نہیں۔ رپورٹ کے مطابق رہائی کے بعد گھر والوں نے اسے زنجیروں سے باندھ کر رکھا لیکن ایک بار زنجیریں کھول کر فرار ہونے اور گا¶ں کے لوگوں کے اس سے خوف کھانے کے باعث اس کی ماں نے اس کے لئے ایک پنجرہ تعمیر کرایا جہاں وہ زندگی گزار رہا ہے۔ اس کی ماں نے دکھ بھرے لہجے میں کہا کہ میرے بیٹے کا ذہنی توازن ٹھیک نہیں اور وہ کسی کو قتل کر سکتا ہے لیکن اس کے باوجود وہ میرا بیٹا ہے اسے اپنے ہاتھوں سے پنجرے میں بند کرنا ایسا ہی ہے جیسے چاقو سے اس پر وار کئے جا رہے ہوں۔