جماعت اسلامی انتخابات میں قوم کو سرپرائز دے گی: منور حسن


کراچی (آن لائن) جماعت اسلامی کے امیر سید منور حسن نے کہا ہے کہ چہرے بدل بدل کر اقتدار میں آنے والوں نے عوام کو دہشت گردی، بھتہ خوری اور بدامنی کے سوا کچھ نہیں دیا، ملک کے حالات مخلص اور دیانتدار افراد ہی بدل سکتے ہیں، جماعت اسلامی ہی ملک کی تقدیر بدل سکتی ہے، جماعت اسلامی انتخابات میں قوم کو سرپرائز دے گی۔ اتحاد کے لئے تمام آپشنز کھلے ہیں فیصلہ انتخابات کے اعلان کے بعد کیا جائے گا، حالات کی تبدیلی کے لئے ناگزیر ہے کہ عوام ووٹ دینے کے رویے کو تبدیل کریں۔ دہشت گردوں اور بھتہ خوروں کو ووٹ دینے کے نتیجے میں دہشت گردی اور بھتہ کی پرچیاں ہی ملیں گی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ادارہ نور حق میں ہر سطح کے ناظمین انتخاب کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اجتماع سے محمد حسین محنتی اور نسیم صدیقی نے خطاب کیا۔ منور حسن نے کہا کہ حکمرانوں کی موجودہ پالیسیوں کی وجہ سے پورا ملک افراتفری اور بے یقینی کا شکار ہے، دہشت گردی کے خلاف جنگ میں حصہ لے کر اپنے ہی ملک کی سلامتی اور خودمختاری کو دا¶ پر لگا دیا گیا ہے، عاقبت نااندیشانہ فیصلوں کی وجہ سے پورا ملک بم دھماکوں سے گونج رہا ہے۔ غربت، مہنگائی، بےروزگاری اور بدامنی اپنے عروج پر ہے۔ جب تک ملک میں زرداری کی حکومت ہے ملک میں امن قائم ہو سکتا ہے اور نہ ہی غربت کا خاتمہ ممکن ہے۔ جن لوگوں نے حکمران ٹولے کو جھولیاں بھر بھر کے ووٹ دئیے تھے آج وہی لوگ ہاتھ اٹھا اٹھا کر انہیں بددعائیں دے رہے ہیں۔ کراچی میں لوگ اگر دہشت گردوں اور بھتہ خوروں کو ووٹ دیں گے تو اس کا وہی نتیجہ نکلے گا جو نکل رہا ہے۔ ایم ایم اے میں شمولیت کے لئے جماعت اسلامی نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ مولانا فضل الرحمن کو غور فرمانے کی زحمت نہیں دے گی جبکہ جامعہ بنوریہ عالمیہ کے دورے کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے منور حسن نے کہا ہے کہ عوام کو کبھی لسانیت تو کبھی قومیت، فرقوں اور کبھی خودساختہ طالبان کے نام پر لڑایا اور ڈرایا جا رہا ہے، افغانستان میں شکست کھانے کے بعد امریکہ اپنی شکست پر پردہ ڈالنے کے لئے پاکستان کو قربانی کا بکرا بنانا چاہتا ہے۔