مقبوضہ کشمیر : بھارتی قبضے کے 66 برس مکمل ہونے پر کل یوم سیاہ منایا جائے گا‘ ہڑتال ہو گی

لاہور/سری نگر (نیوز رپورٹر/کے پی آئی) کل جماعتی حریت کانفرنس کی اپیل پر کل (27اکتوبر) کو بھارتی قبضے کے خلاف مقبوضہ کشمیر میں احتجاجی ہڑتال ہوگی اور ےیوم سےاہ مناےیا جائے گا۔ ریاست کے دونوں حصوں میں بھارتی قبضے کے خلاف جلسے جلوس اور مظاہرے ہوں گے ریلیاں بھی نکالی جائیں گی ۔27 اکتوبر 1947ءمیں بھارت نے اپنی فوجوں کو جموں وکشمیر کی سرزمین میںاتار کر اسے اپنی غلامی کی زنجیروں میں جکڑ لیا تھا۔ دختران ملت، پیپلز فریڈم لیگ اور اسلامی تنظیم آزادی نے 27اکتوبر تو تاریخ کشمیر کا ایک منحوس دن قرار دیتے ہوئے اس روز ہڑتال کرنے کی اپیل کی۔ آسیہ اندرابی نے کہا کہ بھارت نواز تنظیمیں کشمیریوں کی ہمدردی کا ڈھونگ رچا رہی ہیں۔ دریں اثناءپیپلز فریڈم لیگ کے جنرل سیکرٹری غلام احمد پرے نے کہا کہ اس دن کی تلخیاں اور مصیبتیں اس بات کی متقاضی ہیں کہ ہم بحیثیت ایک زندہ قوم اس دن کو یوم سیاہ منا کر پوری دینا پر واشگاف الفاذ میں واضح کریں کہ ہم بھارت کے جبری قبضے کو سرے سے مانتے ہی نہیں ہیں۔ ادھر اسلامی تنظیم آزادی چیئرمین عبدالصمد انقلابی نے 27اکتوبر کو یوم سیاہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اسی دن بھارت کی فوج نے جموں وکشمیر کی سرزمین پر قدم ڈالتے ہوئے قبضہ کیا تھا۔کشمیری رہنما اور آزاد جموں و کشمیر میں مسلم لیگ (ن) صوبہ پنجاب کے سربراہ سید نصیب اللہ گردیزی نے بتایا کہ اسی دن کے منانے کا مقصد عالمی سطح پر بھارت کی نام نہاد جمہوریت کا پول کھولنا اور کشمیر میں کشمیریوں پر ہونے والے ظلم و ستم کی داستان کو منظر عام پر لانا ہے۔ رہنما دیوان غلام محی الدین نے کہا کہ گزشتہ کئی دھائیوں سے بھارتی فوج کشمیریوں پر ظلم و ستم رواں رکھے ہوئے ہے۔ انشاءاللہ وہ دن دودر نہیں جب کشمیریوں کو حق خود ارادیت مل کر رہے گا۔ واضح رہے کہ 27اکتوبر (اتوار) کو یوم سیاہ کے موقع پر صوبائی دارالحکومت کے کشمیر سنٹر سمیت دیگر مقامات پر تقریبات کا انعقاد کیا جائے گا۔