افغانستان: ڈرون حملہ، جھڑپیں،40 افراد ہلاک: طالبان نے مغوی جج کو پھانسی دیدی

افغانستان: ڈرون حملہ، جھڑپیں،40 افراد ہلاک: طالبان نے مغوی جج کو پھانسی دیدی

کابل (اے پی پی+این این آئی+ نو ائے وقت رپورٹ) مشرقی افغانستان میں ڈرون حملے ،جھڑپوںمیں 7 طالبان سمیت 40 افرادہلاک اور 3 زخمی ہوگئے۔ ننگر ہار میں جھڑپوں میں داعش کے 30 جنگجو اور تین شہری ہلاک ہوگئے۔ افغان ذرائع ابلاغ کے مطابق گورنر ننگر ہار کے ترجمان عطاء اللہ خوگیانی نے بتایا کہ ننگرہار کے ضلع لالپورہ میں امریکی جاسوس طیاروں نے دو مقامات کو نشانہ بنایا ۔ ایک کار ایک موٹر سائیکل اور دیگر سامان کو شدید نقصان پہنچا۔ افغانستان کے صوبے ننگرہار میں داعش اور افغان فورسز میں جھڑپیں ہوئیں۔ داعش نے حملے میں خواتین سمیت 30 افراد کو اغواء کرلیا۔ ادھر افغان طالبان نے صوبہ فراہ میں ایک مقامی عدالت کے جج شمس الرحمنکو پھانسی دیدی۔ فراہ کے گورنر کے ترجمان محمد ناصر مہری نے اخبارنویسوں کو بتایا کہ طالبان نے جج کو گزشتہ رات فراہ روڈ پر اغوا کر لیا اور ہفتے کو خاک سفید ضلع میں ان کو پھانسی دیدی۔ جج شمس الرحمن فراہ صوبے میں جج تھے۔