عراق: حملے میں 69 قیدی ہلاک‘ جنگجوئوں کا شام کیساتھ سرحدی چوکیوں‘ تل عفر ہوائی اڈے پر کنٹرول

عراق: حملے میں  69 قیدی ہلاک‘ جنگجوئوں کا شام کیساتھ سرحدی چوکیوں‘ تل عفر ہوائی اڈے پر کنٹرول

 بغداد (اے پی اے+ بی بی سی + آن لائن) عراق میں ملکی فوج اور عسکریت پسندوں کے مابین ہونے والی جھڑپوں میں سینکڑوں عراقی فوجیوں کی ہلاکت کی اطلاعات موصول ہو رہی ہیں۔ اس سے پہلے بغداد سے جنوب کی جانب واقع ایک علاقے میں قیدیوں کے ایک قافلے پر عسکریت پسندوں کے ایک حملے میں 69 قیدی ہلاک ہو گئے۔ جان کیری کی نوری المالکی سے ملاقات، ملکی حکومت میں سنی نمائندگی میں اضافہ کرنے پر زور دیا گی۔ ادھر آئی ایس آئی ایل کے عسکریت پسندوں نے راوہ اور انا کے ساتھ ساتھ تل عفر کے ہوائی اڈے پر بھی قبضہ کر لیا ہے۔ یورپی یونین نے عراق کے لیے مزید 5 ملین یورو کی امداد کا اعلان کیا ہے۔ اسرائیل نے کہا ہے کہ عراقی ایشو پر امریکہ ایران کے ساتھ رابطے بڑھانے سے گریز کرے۔ موصل آزاد کرانے کے مشن پر مامور عراقی جنرل القریشی فرار ہو گئے۔ ایران نے عراق میں امریکی مداخلت کی مخالفت کر دی۔ داعش جنگجوئوں نے عراقی کے بڑے حصوں کو ایک دوسرے سے کاٹ دیا۔ عراقی حکومت نے امریکہ سے پھر درخواست کی ہے کہ اسے فوری طور پر فضائی امداد فراہم کی جائے جبکہ امریکی وزیر خارجہ جان کیری خطے کے رہنمائوں سے بات چیت کی غرض سے اردن کے دارالحکومت عمان پہنچ گئے ہیں۔ وزیر خارجہ ہوشیار زبیری نے کہا کہ میں نے باضابطہ طور پر امریکی حکومت سے درخواست کی ہے کہ وہ ہمیں فضائی مدد فراہم کریں۔ عراق کے پاس فضائیہ نہیں ہے۔ عراق کے پاس ایک بھی جنگی طیارہ نہیں ہے۔