فرانس میں برقعہ پوش مسلم خواتین پر حملوں میں اضافہ ہوگیا

پیرس (اے پی پی) فرانس میں برقعہ پوش مسلم خواتین پر حملوں میں اضافہ ہوگیا ہے۔ مقامی میڈیا مذکورہ معاملہ پر پردہ ڈالنے کیلئے خاموش تماشائی بنا ہوا ہے۔ مسلم خواتین نے برقعہ قانون کے خلاف احتجاجی مہم شروع کردی ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق فرانس میں برقعہ اور حجاب اوڑھنے والی مسلم خواتین پر نامعلوم افراد کی جانب سے حملے کئے جارہے ہیں۔ پیرس اور دیگر شہروں میں نقاب اور برقعہ پہننے والی مسلم خواتین کو ٹارگٹ بنا کر حملے ہوئے ہیں۔ حکومت نے برقعہ اور نقاب اوڑھنے پر پابندی کاقانون لاگو کیا ہوا ہے جو 2011ءمیں پاس کیا گیا تھا۔ مسلم خواتین کو نشانہ بنانے اور حملوں کے خلاف فرانس میں مسلمان خواتین نے احتجاجی مہم شروع کردی ہے۔ احتجاجی مہم کی قیادت کرنے والی مسلم خاتون رہنما رحمانی سمیجہ نے کہا ہے کہ فرانس میں مسلم خواتین پر حملوں کے خلاف یہاں کا میڈیا خاموش ہے، تشدد اور حملوں کی کوئی خبر نہیں دی جارہی، ہماری آواز بھی نہیں سنی جارہی۔حکومت فرانس کو برقعہ قانون کے خاتمہ کیلئے ٹھوس اقدامات اٹھانے ہوں گے۔ فرانس کا میڈیا اس ایشو پر خاموش تماشائی بنا ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کئی حاملہ خواتین پر بھی حملے ہوچکے ہیں۔