طرابلس کی دو مساجد میں بم دھماکے‘ 42 افراد جاں بحق‘ 400 زخمی‘ اسرائیلی فضائیہ کا حملہ‘ کوئی جانی نقصان نہیں ہوا

طرابلس کی دو مساجد میں بم دھماکے‘ 42 افراد جاں بحق‘ 400 زخمی‘ اسرائیلی فضائیہ کا حملہ‘ کوئی جانی نقصان نہیں ہوا

لندن (بی بی سی ڈاٹ کام + اے ایف پی + ایجنسیاں) لبنان کے شہر طرابلس میں مساجد میں ہونے والے دو دھماکوں کے نتیجے میں کم از کم بیالیس جاں بحق اور چار سو افراد زخمی ہوگئے۔ ریڈ کراس کے مطابق ملک کے دوسرے بڑے شہر طرابلس میں جیسے ہی نماز جمعہ ختم ہوئی تو پہلا دھماکہ مسجد التقویٰ میں ہوا۔ اس کے پانچ منٹ بعد دوسرا دھماکہ مسجد السلام میں ہوا۔ لبنان کے ہمسایہ ملک شام میں جاری جنگ کے اثرات لبنان پر بھی مرتب ہورہے ہیں اور یہاں مقیم شیعہ علوی اور سنی مسلک کے درمیان کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے۔ اطلاعات کے مطابق لبنان کے سنی مسلک کے سب سے نمایاں مذہبی رہنما شیخ سلیم رافعی مسجد التقویٰ میں نماز کے لئے آتے ہیں۔ ابھی تک یہ واضح نہیں کہ شیخ رافعی دھماکے کے وقت مسجد میں موجود تھے کہ نہیں۔ ٹی وی پر دکھائے جانے والے مناظر میں دھماکے کے بعد گاڑیوں کو آگ لگی ہوئی تھی اور لوگ زخمی افراد کو اٹھا کر گلی میں بھاگ رہے تھے۔ اسرائیلی فوج کے ترجمان کے مطابق اسرائیلی فضائیہ نے بیروت پر حملہ کیا، ملہ لبنانی دارالحکومت بیروت کے جنوبی حصے میں کیا گیا جسے لبنانی تنظیم حزب اللہ کا گڑھ سمجھا جاتا ہے۔ جمعے کی صبح اسرائیلی طیاروں نے ایک ٹارگٹ کو نشانہ بنایا، حملے میں کسی شخص کے زخمی یا ہلاک ہونے کی اطلاع نہیں تاہم حملے کے بعد لبنانی حکومت نے علاقے میں سکیورٹی سخت کردی ہے۔