مقبوضہ کشمیر : سانحہ گاﺅکدل کی پچسویں برسی پر کاروبار زندگی معطل رہا گستاخانہ خاکوں کیخلاف آج ہڑتال کی جائیگی

مقبوضہ کشمیر : سانحہ گاﺅکدل کی پچسویں برسی پر کاروبار زندگی معطل رہا گستاخانہ خاکوں کیخلاف آج ہڑتال کی جائیگی

سرینگر (کے پی آئی) سانحہ گاﺅ کدل کی25 ویں برسی کے موقعہ پرسول لائنز اور اسکے ملحقہ علاقوں میں مکمل ہڑتال رہی جس کی وجہ سے کاروبار مفلوج ہوکر رہ گیا اور بعد دوپہر مائسمہ میں مظاہرہ کرنے والے نوجوانوں پر پولیس نے شیلنگ کردی ۔ اس دوران لبریشن فرنٹ،تحریک حریت ،سالویشن مومنٹ اور دیگر تنظیموں کی طرف سے جلوس نکالے گئے۔شہدا کو خراج عقیدت پیش کیا گیا۔ سول لائنز کے ریگل چوک، پولو ویو،گاﺅ کدل ، مائسمہ ، مدینہ چوک، لالچوک ، کورٹ روڈ اور دیگر ملحقہ بازاروںمیں تمام دکانیں اورکاروباری ادارے بند رہے۔ نوجوانوں نے ریڈ کراس روڈ پر پولیس پر پتھراﺅ کیا اور پولیس نے انہیں منتشر کرنے کیلئے ان کا تعاقب کرکے شیلنگ کی ۔ سید علی گیلانی نے گاکدل سانحہ سمیت قتل عام کے تمام واقعات کی کسی غیرجانبدار ادارے کے ذریعے سے تحقیقات کرانے کی اپیل کی ،گستاخانا خاکوں کے خلاف آج ہڑتال ہو گی۔
 گزینوں کو یہاں کی مستقل شہریت دینے کی بات کی جارہی ہے اور کشمیری قوم اس کی ہرگز اجازت نہیں دے سکتا ۔انہوں نے کہا کہ اگر بھارت نے اس حوالے سے کوئی پہل کی تو ہر کشمیری سڑک پر آکر اس کے خلاف منظم احتجاج کرے گا۔ انہوں نے فرانس میں توہین آمیز خاکوں کی اشاعت کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے جمعہ کے دن مکمل اور بھرپور احتجاجی ہڑتال کرنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ ہم اپنے پرامن اور مثالی احتجاج سے دنیا پر باور کردیں گے کہ مسلمان سب کچھ برداشت کرسکتا ہے مگر آنحضور کی شان میں کوئی بھی گستاخی برداشت نہیں کرے گا ۔ 26 جنوری کے موقع پر امریکی صدر باراک اوباما کے دورہ بھارت پر انہوں نے کہا کہ اوباما اگر دنیا میں امن چاہتے ہیں تو انہیں کشمیر، فلسطین اور دیگر متنازعہ خطوں کے لوگوں کے بنیادی مسئلہ کو حل کرنا ہوگا۔ متحدہ علما اہلسنت جموں و کشمیر نے فرانس میں گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کے خلاف آج جمعہ کو مکمل ہڑتال کرنے کی اپیل کی ہے۔ ادھرجماعت اسلامی مقبوضہ کشمیر کا کہنا ہے کہ توہین رسالت ایک ایسا گھناﺅنا اور بھیانک جرم ہے جو امت مسلمہ کے لیے کسی بھی صورت میں قابل قبول نہیں ہوسکتا ہے اور یہ امت کی غیرت اور ایمان کے لیے ایک کھلا چیلنج ہے جبکہ امت کو متحد ہوکر اس قبیح ترین جرم کے استحصال کے لیے ایسا موثر لائحہ عمل تشکیل دینا چاہیے جو مسلمان حکمرانوں کو کم از کم توہین رسالت کے مرتکب افراد اور اداروں کے خلاف ہر ممکن کارروائی کرنے پر مجبور کرے۔ دریں اثناءچیئرمین متحدہ جہاد کونسل اور حزب المجاہدین کے سپریم کمانڈر سید صلاح الدین نے رفیوجیوں کو مستقل شہریت دینے کو قابل مذمت قرار دیتے ہوئے خبردار کیا کہ اس اقدام کا مقصد مقبوضہ کشمیر کی مسلم اکثریتی شناخت کو تبدیل کرنا ہے۔ کل جماعتی حریت کانفرنس (گ) نے بارہ مولہ کے دو طالب علموں سمیر احمد گوجری اور آصف احمد حلوائی پر تازہ پی ایس اے لاگو کرنے کو ریاستی دہشت گردی کی بدترین مثال قرار دیتے ہوئے اس کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے اور ایمنسٹی انٹرنیشنل سے ان دونوں نوجوانوں کی فوری رہائی کےلئے اپنا اثرو رسوخ استعمال کرنے کی اپیل کی ہے۔ ادھر کل جماعتی حریت کانفرنس (گ) نے بھارتی پارلیمانی کمیٹی کی پناہ گزینوں سے متعلق سفارشات، ان کے مضمرات اور دوررس منفی اثرات کے سلسلے میں ایک عوام بیداری مہم چلانے کے تحت 29جنوری ایک روزہ سیمینار بلانے کا فیصلہ کیا ہے۔ دریں اثناءکل جماعتی حریت کانفرنس جموں وکشمیر نے دنیا بھر میں بھارت کے یو م جمہوریہ 26جنوری کو بطور یو م سیاہ منانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ حر یت کانفرنس کی طرف سے پیرکو اقوام متحدہ کے دفتر کے سامنے پُر امن احتجاج بھی کیا جائے گا۔
سانحہ گا¶کدل