صدارتی انتخاب : کرزئی اور عبداللہ نے امریکہ کو سرکاری نتائج کا احترام کرنیکی یقین دہانی کرا دی

کابل (جی این آئی) افغانستان میں صدر حامد کرزئی اور ان کے حریف عبداللہ عبداللہ نے امریکہ کو صدارتی انتخابات کے سرکاری نتائج کا احترام کرنے کی یقین دہانی کرا دی۔ امریکی صدر کے خصوصی ایلچی برائے پاک افغان امور رچرڈ ہالبروک نے صدارتی انتخابات کے بعد حامد کرزئی اور ان کے اہم صدارتی حریف عبداللہ عبداللہ سے ملاقاتیں کیں۔ اس موقع پر رچرڈ ہالبروک نے صحافیوں کو بتایا کہ دونوں امیدواروں نے انہیں یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ الیکشن کمشن کے سرکاری نتائج کا احترام کریں گے۔ کرزئی اور عبداللہ کی جانب سے سرکاری نتائج سے قبل ہی اپنی فتح کے اعلانات کے حوالے سے پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں امریکی ایلچی کا کہنا تھا کہ یہ ان کا ذاتی مؤقف ہے۔ انہوں نے کہا کہ افغان انتخابات میں واشنگٹن کی غیرجانبدار ہے۔ دوسری جانب افغان الیکشن کمشن نے کہا ہے کہ انتخابات کے ابتدائی نتائج کا اعلان 25 اگست کو ہو گا۔ واضح رہے کہ حامد کرزئی کو پشتون اکثریت کی حمایت حاصل ہے جبکہ سابق وزیر خارجہ عبداللہ عبداللہ تاجک ہیں اور تاجک اکثریتی شمال میں خاصا اثرورسوخ رکھتے ہیں۔ تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ صدارتی انتخابات کے نتائج متنازعہ ہونے کی صورت میں افغانستان میں پشتوننوں اور تاجک اقلیت کے مابین لسانی کشیدگی پیدا ہونے کا خدشہ ہے۔