کابل: سرینا ہوٹل پر حملے میں ہلاکتیں9 ہو گئیں‘4 غیر ملکی بھی شامل

کابل: سرینا ہوٹل پر حملے میں ہلاکتیں9  ہو گئیں‘4  غیر ملکی بھی شامل

لندن (بی بی سی اردو+ اے ایف پی+ ثناء نیوز) افغانستان کے دارالحکومت کابل کے فائیو سٹار ہوٹل سرینا میں مسلح حملہ آوروں کی فائرنگ سے ہلاک ہونے والوں کی تعداد 9 ہو گئی۔ افغانستان کے نائب وزیر داخلہ جنرل محمد ایوب سالنگی کے مطابق مرنے والوں میں چار غیر ملکی اور دو بچے بھی شامل ہیں جبکہ چھ افراد زخمی ہوئے۔ فرانسینی نیوز ایجنسی کے مطابق ان کے سینئر رپورٹر سردار احمد، انکی بیوی اور دو بچے بھی حملے میں مارے گئے۔ فورسز کی کارروائی میں چاروں حملہ آور بھی مارے گئے ہیں۔ یہ ہوٹل غیر ملکیوں میں کافی مقبول ہے۔ طالبان نے حملے کی ذمہ داری قبول کر لی ہے۔ حکام کے مطابق چاروں حملہ آور نوجوان تھے اور انہوں نے پسٹلز اپنی جرابوں میں چھپا رکھے تھے۔ یہ لوگ شام چھ بجے ہوٹل میں داخل ہوئے اور نئے سال کے موقع پر نوروز کے لئے خصوصی کھانے کی خواہش ظاہر کی جس کے بعد تین گھنٹے غسل خانے میں چھپے رہے اور عین رات کے کھانے کے وقت باہر آکر فائرنگ شروع کر دی۔ مرنے والوں میں چار خواتین، تین مرد اور دو بچے شامل ہیں۔ زخمیوں میں افغان ممبر پارلیمان حبیب افغان بھی شامل ہیں۔ ان کے چہرے، پیٹ اور ٹانگ میں گولی لگی۔ افغان وزراتِ داخلہ کے مطابق گارڈ سے ملنے والے معلومات کے مطابق حملہ آوروں کی عمریں 18 سال سے کم تھیں۔ ثناء نیوز کے مطابق پاکستان نے کابل ہوٹل پر حملے کی شدید مذمت کی ہے۔ ترجمان دفتر خارجہ تسنیم اسلم نے حملے میں ہلاک ہونے والوں کے خاندانوں سے ہمدردی کی اور کہا کہ پاکستان زخمیوں کی صحت یابی کیلئے دعاگو ہے۔