معمرقذافی کی جانب سے باغیوں کے خلاف جنگ بندی کے باوجود لیبیا پراتحادی افواج کے حملے جاری، ادھراقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا اجلاس جمعرات کو طلب ۔

معمرقذافی کی جانب سے باغیوں کے خلاف جنگ بندی کے باوجود لیبیا پراتحادی افواج کے حملے جاری، ادھراقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا اجلاس جمعرات کو طلب ۔

لیبا کے صدر معمر قذافی کی جانب سے باغیوں کے خلاف جنگ بندی کے اعلان کے باوجود طرابلس اور دیگر مقامات پر اتحادی افواج کے حملے جاری ہیں۔ بحیرہ روم میں موجود امریکی بحری جہاز اور اتحادی افواج کے درجنوں لڑاکا طیارے آپریشن اڈیسی ڈان میں حصہ لے رہے ہیں۔ تازہ اطلاعات کے مطابق ان حملوں اور بمباری کے نتیجے میں طرابلس میں معمرقذافی کے صدارتی محل اور نیول ہاؤس کو بھی نقصان پہنچا ہے جبکہ فرانسیسی طیاروں نے معمر قذافی کے آبائی شہر سرت اور بن غازی کے اطراف میں بھی بمباری کی ہے۔ طرابلس شہر میں رات کے وقت دھماکوں کی آوازیں سنی گئیں،غیر ملکی ٹی وی کے مطابق باغیوں کے ساتھ لڑائی میں معمر قذافی کے بیٹے خامس قذافی کی ہلاکت کی اطلاع ہے۔ ادھراقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا اجلاس جمعرات کو طلب کر لیا گیا ہے دوسری طرف افریقی ممالک کے سربراہی پینل نے لیبیا میں جاری کشیدگی کو ختم کرنے کے لئے پچیس مارچ کو افریقن یونین کا اجلاس طلب کرنے کا مطالبہ کیا ہے جبکہ عرب لیگ کے سیکرٹری جنرل امرموسیٰ کا کہنا ہے کہ لیگ لیبیا میں فوجی کارروائی نہیں چاہتی تھی۔ دوسری طرف لیبیا میں اتحادیوں کے فوجی آپریشن کے خلاف یونان کے شہر ایتھنز اور بیلجیئم کے دارالحکومت برسلزمیں احتجاجی مظاہرے کئے گئے۔