اسرائیل کے سابق صدر موشے کستاف کو خاتون سے زیادتی کے الزام میں سات برس قید اور جرمانے کی سزا سنادی گئی ہے۔

اسرائیل کے سابق صدر موشے کستاف کو خاتون سے زیادتی کے الزام میں سات برس قید اور جرمانے کی سزا سنادی گئی ہے۔

موشے کستاف پر وزارت سیاحت اور پریذیڈنٹ ہاؤس کی دو خواتین کے ساتھ ذیاتی اورانہیں ہراساں کا الزام ہے۔ سابق اسرائیلی صدر کے خلاف مقدمے کی سماعت تل ابیب کی مقامی عدالت ہوئی۔ تین رکنی بینچ نے تین ماہ کی سماعت کے بعد مقدمے کا فیصلہ سناتے ہوئے سابق اسرائیلی صدر کو سات سال قید کی سزا کا حکم دیا ہے۔ موش گستاف کو ایک خاتون کو اٹھائس ہزار تین سو امریکی ڈالر جبکہ دوسری خاتون کو سات ہزار ڈالر جرمانہ بھی ادا کرنا ہوگا۔ سابق اسرائیلی صدرنے فیصلے کے خلاف اعلیٰ عدلیہ سے رجوع کرنے کا ارادہ ظاہر کیا ہے۔ اسرائیل کی تاریخ میں پہلی مرتبہ کسی سابق صدر کو قید کی سزا دی گئی ہے۔