سندھ ہائیکورٹ نے ڈاکٹرعاصم کی درخواست ضمانت پرفیصلہ محفوظ کر لیا

کراچی (آن لائن) سندھ ہائی کورٹ نے کرپشن کے الزام میں گرفتار سابق وفاقی مشیر پٹرولیم ڈاکٹر عاصم حسین کی درخواست ضمانت پرفیصلہ محفوظ کر لیا۔ سندھ ہائی کورٹ نے 462 ارب روپے کی کرپشن کے الزام میں گرفتار سابق وفاقی مشیر پٹرولیم اور پیپلز پارٹی کے رہنما ڈاکٹر عاصم حسین کی درخواست ضمانت پرفیصلہ محفوظ کر لیا ہے۔
درخواست ضمانت کی سماعت سندھ ہائی کورٹ کے ریفری جج جسٹس آفتاب احمدگورر پرمشتمل بنچ نے کی۔ اس موقع پر ڈاکٹر عاصم کے وکیل سردارلطیف کھوسہ نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹرعاصم شدید بیمار ہیں، ضمانت انکاحق ہے۔جیل میں علاج کے باوجود ان کا نچلادھڑ شدید متاثر ہواہے۔دوران حراست ان پر دل کادورہ پڑ چکا ہے۔ ان پر فالج کابھی حملہ ہو چکا ہے۔ یہ کہنا کہ ڈاکٹر عاصم کو انکی مرضی کے مطابق علاج کی سہولت دی جارہی ہے، بالکل گمراہ کن ہے جبکہ نیب کے وکیل محمد الطاف نے کہا کہ ڈاکٹرعاصم کا انکی مرضی کے مطابق علاج کرایا جا رہا ہے۔ وکیل نیب نے کہا کہ ڈاکٹرعاصم رینجرز کے وردی سے ڈرتے ہیں یہ کوئی بیماری نہیں بلکہ ان کے کہنے کے مطابق ان کانفسیاتی علاج بھی ہو رہا ہے۔
ڈاکٹر عاصم