اوباشوں کی 6 خواتین، 5 سالہ سمیت 2 لڑکوں سے زیادتی

شیخوپورہ/ سید والہ/ ننکانہ صاحب (نامہ نگارخصوصی + نمائندہ نوائے وقت + نامہ نگار) اوباشوں نے مختلف شہروں میں 6 خواتین اور 5 سالہ سمیت 2 لڑکوں کو ہوس کا نشانہ بنا دیا جبکہ وزیراعلیٰ پنجاب نے مریدکے اور شرقپور میں 2 لڑکیوں سے زیادتی کا نوٹس لیتے ہوئے رپورٹ طلب کرلی۔ شیخوپورہ سے نامہ نگار خصوصی کے مطابق نواحی گاﺅں چک نمبر 40 میں مقامی محنت کش کے 5 سالہ بچے کو ابوبکر نے ساتھی سے ملکر کھیتوں میں لے جا کر زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ مزید براں تھانہ صدر مریدکے کے علاقہ پٹیالہ دوست محمد میں بااثرشخص کے دو بیٹوں نے محمد یونس کی بیٹی کے ساتھ زبردستی زیادتی کرڈالی۔ وزیراعلیٰ پنجاب نے اس واقعہ اور 2 روز قبل شرقپور کے علاقہ فتووالہ میں گونگی بہری لڑکی سے زیادتی کا نوٹس لیتے ہوئے اعلیٰ حکام سے رپورٹس طلب کرلیں۔ سید والہ سے نامہ نگار کے مطابق کینڈا کالونی کی رہائشی (س) رفع حاجت کیلئے کھیتوں میں گئی جہاں عمران نے دیگر ساتھیوں کی مدد سے اسے زیادتی کا نشانہ بنادیا۔ ننکانہ صاحب سے نمائندہ نوائے وقت کے مطابق طالبہ (ن) کے والدین شادی کی تقریب میں گئے ہوئے تھے کہ محلہ کے دو اوباشوں یاسر اور زین نے (ن) بی بی کو اس کے والدین کا پیغام دینے کے بہانے دروازہ کھلوایا اور کمرے میں لے جاکر زبردستی بے آبرو کرڈالا۔ فیصل آباد سے نمائندہ خصوصی کے مطابق چک نمبر615گ۔ب کی رہائشی(م) کھیتوں میں رفع حاجت کیلئے جا رہی تھی کہ غلام عباس وغیرہ دو افراد نے اسے زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ پاکپتن سے نامہ نگار کے مطابق ٹبہ سلطان کی رہائشی 40 سالہ روبینہ بی بی کو علی احمد وغیرہ 8 افراد نے اغوا کیا اور دو نامعلوم ملزمان نے خاتون کو زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ جکھڑ سے نامہ نگار کے مطابق 736گ۔ب کی کوثر بی بی کو اللہ دتہ اور نوشیر وغیرہ اپنے مسلح ساتھیوں کے ہمراہ گھر سے اغوا کرکے لے گئے اور کئی روز تک زیادتی کا نشانہ بناتے رہے۔ جھنگ میں سیٹلائٹ ٹاﺅن کے رہائشی 13 سالہ محمد عثمان کو شہریار نے زیادتی کا نشانہ بنایا۔ پولیس نے مقدمات درج کر لئے۔
زیادتی