تین روز قبل بحیرۂ روم میں تارکینِ وطن کی کشتی کو پیش آنے والے حادثے میں ہلاکتوں کی تعداد850 ہوسکتی ہے:اقوامِ متحدہ

 تین روز قبل بحیرۂ روم میں تارکینِ وطن کی کشتی کو پیش آنے والے حادثے میں ہلاکتوں کی تعداد850 ہوسکتی ہے:اقوامِ متحدہ

اقوامِ متحدہ کے ادارہ برائے مہاجرین کی ترجمان کارلوٹا سامی کا کہنا ہے کہ حادثے میں بچ جانے والے افراد کے مطابق کشتی میں سات سو سے زائد افراد سوار تھے، جن کا تعلق  اریٹریا، صومالیہ اور شام کے علاوہ مغربی افریقہ سے تھا،، کارلوٹا سامی نے انکشاف کیا کہ مصدقہ اطلاعات کے مطابق انسانی سمگلروں نے کشتی میں سوار درجنوں افراد کو نچلے حصے میں بند کرکھا تھا، اس لئے کہا جاسکتا ہے کہ مرنے والوں کی تعداد ساڑھے آٹھ سو تک ہوسکتی ہےادھر اطالوی پولیس نے تین انسانی سمگلروں کو گرفتار کرلیا ہے، جن میں سے ایک شخص کا تعلق تیونس جبکہ دو کا تعلق شام سے بتایا جارہا ہےواضح رہے کہ غیرقانونی تارکین وطن کی کشتی تین روز قبل لیبیا کے ساحل سے ستائیس کلومیٹر دور ڈوب گئی تھی