امریکہ: طیارے کا نظام ہیک کرنے کا دعویٰ کرنیوالے سکیورٹی ماہر کو طیارے پر سوار ہونے سے روک دیا گیا

واشنگٹن (نیٹ نیوز) امریکہ میں یونائیٹڈ ایئر لائنز نے سکیورٹی امور کے ایک ماہر کو جہاز پر سوار ہونے سے روک دیا جس نے ٹویٹ کرتے ہوئے دعویٰ کیا تھا کہ وہ طیارے کے نظام کو ہیک کر سکتا ہے۔ کرس رابرٹ ہفتہ کو ایک بڑی سکیورٹی کانفرنس میں شرکت کے لیے کولراڈو سے سین فرانسسکو جانے والے تھے۔ اس سے قبل انہوں نے ٹویٹ کیا تھا کہ ان کے خیال میں وہ طیارے کے آکسیجن سسٹم کو چلا سکتے ہیں۔ یونائیٹڈ کا کہنا ہے کہ ہم پْر اعتماد ہیں کہ ہمارے نظام کو ہیک نہیں کیا جا سکتا کیونکہ ’مسٹر رابرٹ نے جو تکنیک بتائی ہے اس سے ہمارے سسٹم تک رسائی ممکن نہیں۔‘ بی بی سی کے مطابق کرس رابرٹ سائبر سکیورٹی فرم ’ون ورلڈ لیب‘ کے بانی ہیں جو آئی ٹی نظام میں خامیوں کا پتہ لگا کر کمپنیوں کو خبردار کرتی ہے تاکہ جرائم پیشہ افراد اس کا فائدہ نہ اٹھا سکیں۔ گزشتہ ہفتے تفتیشی ادارے ایف بی آئی نے انہیں یونائیٹڈ کی ایک فلائٹ پر سوار ہونے سے روک دیا تھا اور ان کا لیپ ٹاپ بھی ان سے لے لیا گیا تھا۔اس کے بعد تقریباً چار گھنٹے تک کرس رابرٹ سے پوچھ گچھ کی گئی۔ اپنے کام کے سلسلے میںکرس رابرٹ نے حالیہ ہفتوں میں میڈیا کو کئی انٹرویو دیے جن میں انہوں نے بتایا کہ وہ 35 ہزار فٹ کی بلندی پر انجن کو بند کر سکتے ہیں اور کاک پِٹ میں کسی کو پتہ تک نہیں چل سکتا۔ انہوں نے سی این این کو بتایا کہ وہ اپنی سیٹ کے نیچے کمپیوٹر لگا کر طیارے کے انجن کا ڈیٹا اور فلائٹ مینجمنٹ سسٹم دیکھ سکتے ہیں۔ کرس رابرٹ کو طیارے پر سوار ہونے سے کیوں روکا گیا اس بارے میں ایئر لائن کے ترجمان جانسن نے کہا کہ جس طرح کرس رابرٹ نے طیارے کے نظام تک رسائی کا دعوی کیا اس کے بعد ہم نے مسافروں اور عملے کی بہتری کے پیشِ نظر یہ فیصلہ کیا۔