آگرہ کے چرچ میں انتہاپسند ہندوؤں کی توڑپھوڑ کے بعد مسیحیوں میں خوف و ہراس، پولیس ملزموں کو نہ پکڑ سکی

 آگرہ کے چرچ میں انتہاپسند ہندوؤں  کی توڑپھوڑ کے بعد مسیحیوں میں  خوف و ہراس، پولیس ملزموں کو نہ پکڑ سکی

آگرہ (نیوز ڈیسک) بھارت کے تاریخی شہر آگرہ میں انتہاپسند ہندوؤں کی طرف سے چرچ میں توڑ پھوڑ کے بعد شہر کی اقلیتوں خصوصاً مسیحیوں میں خوف و ہراس پھیل گیا۔ بتایا گیا ہے کہ ہفتہ کی رات کو درجن سے زائد نقاب پوشوں نے سینٹ میری چرچ میں گھس کر توڑ پھوڑ کی اور مقدس اوراق پھاڑ ڈالے۔ پادری کو ہراساں کیا۔ پولیس مسیحی برادری کی طرف سے دی گئی 24 گھنٹے کی ڈیڈلائن گزرنے کے باوجود حملہ آوروں کو گرفتار نہیں کر سکی۔ بھارتی فلموں کے اداکار رضا مراد نے مسیحیوں سے اظہار یکجہتی کیلئے چرچ کا دورہ کیا اور پادری مون لیزارس سے ملاقات کی۔