مقبوضہ کشمیر میں جھڑپ‘ تین مجاہد شہید‘ دو بھارتی فوجی شدید زخمی

مقبوضہ کشمیر میں جھڑپ‘ تین مجاہد شہید‘ دو بھارتی فوجی شدید زخمی

سرینگر (اے ایف پی+اے این این) مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کے ساتھ جھڑپ میں 3مجاہد شہید اور 2 فوجی زخمی ہو گئے۔ انسپکٹر جنرل عبدالغنی میر نے غیرملکی خبررساں ایجنسی کو انٹرویو میں بتایا ترال کے قبصے میں مجاہدین کی موجودگی پر ایک مکان کا محاصرہ کیا تو مڈبھیڑ ہو گئی۔  تینوں کا تعلق حزب المجاہدین سے ہے۔  بانڈی پورہ میں پولیس کی جانب سے نوجوانوں کی بلاجواز گرفتاریوں اور گھر گھر چھاپوںکے خلاف چوتھے روز بھی ہڑتال ٗ احتجاجی مظاہرے ٗ کاروباری ادارے بند اور ٹریفک کی آمدورفت معطل رہی۔  9 افراد کو رہا کردیاگیا ٗ بارہمولہ میں روزمرہ سرگرمیاں بحال جبکہ متعدد حریت رہنما تاحال گھروں میں نظربند  ہیں  ،دوسری جانب  سید علی گیلانی نے بھارت کو مسئلہ کشمیر کوسرد خانے میں ڈال کر اپنی ہٹ دھرمی پالیسی جاری رکھنے پر سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ  نو منتخب بھارتی حکومت نے مسئلہ کشمیر کے حوالے سے تاحال کوئی بات نہیں کی۔ حیدر پورہ میں عطیہ خون کیمپ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے گیلانی نے کہاکہ جب اٹل بہاری واجپائی نے مسئلہ کشمیر انسانیت کے دائرے میں رہ کر حل کرنے کی بات کہی تو اس وقت سبھی نے اس کی سراہنا کی لیکن نہ تو خود واجپائی اور نہ ہی ان کے مابعد آنے والی حکومتوں نے اپنے قول وفعل کے تضاد کو ختم کرنے کی کوشش کی اور ابھی تک بھارت اپنے روایتی ہٹ دھرمی کی پالیسی پر گامزن ہے ۔حریت چیئرمین کا کہنا تھا کہ کشمیر مسئلہ کے حل میں تاخیر کا خمیازہ کشمیری عوام کو گذشتہ کئی دہائیوں سے بھگتنا پڑرہا ہے۔
علی گیلانی